.

اسرائیلی فضائیہ نے مصری مسافر طیارہ اتار لیا!

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیلی فوج کا کہنا ہے کہ اس کے جنگی طیاروں نے ہفتے کے روز ایک غیرملکی مسافر طیارے کا راستہ روک کر اسے تل ابیب ایئرپورٹ پر بحفاظت اتروا دیا۔

اسرائیلی میڈیا کے مطابق یہ طیارہ مصری فضائی کمپنی ایئر سینائی کا تھا جو قاہرہ سے تل ابیب جا رہا تھا۔

اسرائیلی فوج کی ایک ترجمان نے بتایا کہ ہفتے کی صبح " فضائیہ کے دو طیاروں نے ایک غیرملکی طیارے کا راستہ روک لیا جو بن گوریون ایئرپورٹ (تل ابیب) کی جانب رواں دواں تھا تاہم اسرائیلی فضائی حدود میں داخلے کے وقت اس نے اپنی شناخت نہیں کرائی تھی"۔

ترجمان نے مزید بتایا کہ " مسافر طیارہ بنا کسی مشکل کے اپنی مقررہ منزل بن گوریون ایئرپورٹ پر اتر گیا"۔ ترجمان کی جانب سے مزید تفصیلات نہیں بتائی گئیں۔

اسرائیلی ریڈیو کے مطابق طیارے کے دونوں کپتان اس روٹ پر پہلی مرتبہ آرہے تھے اور وہ اسرائیل کے قریب پہنچ کر شناخت کے اقدامات کو نظرانداز کررہے تھے۔ ریڈیو نے مزید بتایا کہ "فضائی کمپنی سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ وہ دونوں کپتانوں کو ان ہدایات کی یاد دہانی کرادے"۔

اسرائیلی روزنامے "يديعوت احرونوت" کی ویب سائٹ کے مطابق ایسا معلوم ہوتا ہے کہ تکنیکی مسئلے کی وجہ سے وائرلیس کا رابطہ منقطع ہوگیا تھا۔

مارچ کے اواخر میں ایک مصری باشندے نے قبرص جانے والی پرواز کو اغوا کر لیا تھا۔ اس سے قبل گزشتہ اکتوبر میں روس کا ایک مسافر طیارہ شرم الشیخ سے اڑان بھرنے کے چند منٹوں بعد سیناء میں گر کر تباہ ہوگیا تھا۔ داعش تنظیم نے مذکورہ کارروائی کی ذمہ داری قبول کرلی تھی جس کے نتیجے میں 224 افراد ہلاک ہوئے۔

یاد رہے کہ مصر وہ پہلا عرب ملک تھا جس نے 1979ء میں اسرائیل کے ساتھ امن معاہدہ کیا تھا۔