.

دمشق: خوف ناک آتش زدگی سے بازار جل کر خاکستر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام کے دارالحکومت دمشق کے پرانے علاقے العصرونيہ میں ہفتے کے روز خوف ناک آگ لگنے کے نتیجے میں درجنوں دکانیں جل گئیں، فائر بریگیڈ کی ٹیمیں آگ بجھانے کی کوششوں میں مصروف ہیں۔

تفصیلات کے مطابق ہفتے کی صبح چھ بجے العصرونيہ کے تاریخی بازار کی ایک دکان میں آگ بھڑک اٹھی جس نے تیزی کے ساتھ دیگر دکانوں کو اپنی لپیٹ میں لے لیا۔ آخری خبریں آنے تک کم از کم 50 دکانیں اور ایک گودام جل کر خاکستر ہوچکے تھے۔ شہری دفاع کے اہل کاروں نے عمارتوں کے گرنے کے اندیشے کے سبب شہریوں کو جائے حادثہ سے دور کردیا۔

شام کی سرکاری نیوز ایجنسی نے دمشق میں شہری دفاع کے ڈائریکٹر جہاد موسی کے حوالے سے بتایا ہے کہ آگ بجلی کے شارٹ سرکٹ کے نتیجے میں لگی۔

آگ کی لپیٹ میں آنے والی ایک دکان کے مالک نے غیرملکی خبر رساں ایجنسی سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ "اس کی دکان کے جلنے کے ساتھ ہی وہاں کام کرنے والے دس لوگوں کی روزی بھی ختم ہوگئی"۔

العصرونیہ بازار میں کھلونوں کی ایک دکان کے مالک محمد الاشقر کا کہنا تھا کہ وہ عموما جمعرات کے روز نیا مال لاتے ہیں اور ان کی دکان سامان سے بھری ہوئی تھی جس کے نتیجے میں انہیں 15 لاکھ شامی لیرہ کا نقصان ہوا ہے۔

سیکورٹی فورسز نے بازار کا گھیراؤ کرلیا اور اس سے متصل الحمیدیہ کا بازار بھی بند کروا دیا تاکہ فائربریگیڈز اور شہری دفاع کے عملے کی آمدورفت آسان ہوجائے۔