.

ترکی 1000 ائمہ مساجد اور مبلغین کو جرمنی بھیجے گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

جرمنی نے ملک میں موجود ایک ہزار کے قریب مساجد میں امامت وخطابت کے لیے ترک علماء ومبلغین کی خدمات حاصل کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ ترک حکومت جلد ہی 978 مبلغین جرمنی روانہ کرے گی۔

جرمن اخبار’’ویلٹ ام زونٹاگ‘‘ نے ترک اسلامی فیڈریشن برائے مذہبی امور[DITIB] کے حوالے سے بتایا ہے کہ ترک حکومت جرمنی کی 1000 کے قریب مساجد میں امامت اور خطابت کے لیے مذہبی مبلغین روانہ کرے گی۔

جرمنی کی مساجد میں خدمات انجام دینے والے علماء ’ڈی آئی ٹی آئی بی‘ کے زیرنگرانی فارغ التحصیل ہیں۔اس ادارے سے وابستہ علماء اور ائمہ کرام اندرون ملک کی 900 مساجد میں دینی تعلیم کی خدمات انجام دے رہے ہیں۔ اخباری رپورٹ کے مطابق جرمنی کی مساجد میں امامت وخطابت کے لیے بھیجے جانے والے علماء کرام کم سے کم پانچ سال تک خدمات انجام دیں گے۔

ترک حکومت کی زیرنگرانی تربیت یافتہ علماء و مبلغین کو جرمنی میں امامت وخطابت کے لیے بھجوائے جانے کی خبریں آنے کے بعد سیاسی مخالفین نے حکومت پر کڑی تنقید کی ہے۔ دوسری جانب جرمنی کے سیاسی رہ نما جیم اوزدیمیر نے بات کرتے ہوئے کہا کہ اگرچہ ترک اسلامی یونین کے بیشتر ارکان DITIB کے زیراہتمام مساجد سے وابستہ ہیں مگر یہ ادارہ ترک حکومت کا ایک بازو ہی ہے۔

جرمن سیاست دان کا کہنا تھا کہ ترک حکومت حکمراں جماعت ’’آق‘‘[انصاف وترقی پارٹی] کے مذہبی ونگ سے وابستہ تنظیموں کے افراد کو مساجد میں امامت وخطابت کی ذمہ داریاں سونپتی ہے۔