.

کویت میں جاری یمن امن بات چیت میں اہم پیش رفت

باغیوں اور حکومتی مندوبین کی مشترکہ اجلاس میں شرکت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

کویت کی میزبانی میں یمن کے بحران کے حل کے سلسلے میں جاری بات چیت میں جمعرات کو اہم پیش رفت دیکھنے میں آئی ہے، جس کے بعد امید ہے کہ فریقین کشیدگی کے خاتمے کے لیے مزید موثر کوششیں کریں گے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق جمعرات کے روز ہونے والے اجلاس میں اہم پیش رفت حکومتی نمائندوں اور باغیوں کی مشترکہ اجلاس میں شرکت تھی۔ کویتی حکام اور اقوام متحدہ کی زیر نگرانی ہونے والے اجلاس میں یمنی حکومت کے مذاکرات کاروں کے ساتھ ساتھ حوثی باغیوں اور مںحرف سابق صدر علی عبداللہ صالح کے مندوبین نے شرکت کی۔

اجلاس سے قبل اقوام متحدہ کے یمن کے لیے امن مندوب اسماعیل ولد الشیخ نے حکومت اور باغیوں کے وفود سے الگ الگ ملاقاتیں کیں۔ اپنے ایک بیان میں ولد الشیخ نے بتایا کہ حکومتی مندوبین سے بات چیت میں باغیوں کے انخلاء، اسلحہ ڈالنے، مشترکہ سیکیورٹی کمیٹیاں تشکیل دینے اور جنگ کے خاتمے کے لیے ٹائم فریم دینے کی تجاویز پر بات چیت کی گئی۔ حکومت نمائندگان اور یو این ایلچی کے درمیان ہونے والی بات چیت میں ملک کی اقتصادی صورت حال، متاثرہ علاقوں میں امدادی سرگرمیوں کی بحالی، تعمیر نو، حلب طلب مسائل کے حل کے لیے ماحول سازگار بنانے اور میڈیا پروپیگنڈہ سے گریز کی تجاویز پیش کی گئیں۔

حوثیوں اور علی صالح کے نمائندوں سے بات چیت کے دوران بھی یمن کے بحران کےحل کے حوالے سے مختلف تجاویز پر بات چیت کی گئی۔ ان میں خاص طورپر سیکیورٹی سے متعلق امور اور مستقبل کے سیاسی نقشہ راہ کےحوالے سے مختلف تجاویز پرغور کیا گیا۔ یو این امن مندوب کا کہنا ہے کہ یمن کے بحران کے حل کے سلسلے میں بات چیت مثبت سمت میں آگے بڑھ رہی ہے۔