سلامتی کونسل: حلب کی صورت حال سے متعلق اہم اجلاس

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

عالمی سلامتی کونسل میں شام کے شمالی شہر حلب کی صورت حال پر بحث کے لیے ایک اہم اجلاس (آج) بدھ کے روز منعقد کیا جا رہا ہے۔

اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل کے معاون برائے سیاسی امور جيفری ویلٹمین اجلاس میں سلامتی کونسل کے 15 ارکان کے سامنے شام کے بڑے شہر حلب کی صورت حال پر بریفنگ دیں گے۔ ماسکو اور واسنگٹن حکومتیں اس شہر میں جنگ بندی کی کوششیں کر رہی ہیں۔

اس سے قبل منگل کے روز روس نے اعلان کی تھا کہ وہ "آئندہ گھنٹوں" میں فائربندی تک پہنچنے کی امید رکھتا ہے۔ ادھر امریکی وزیر خارجہ جان کیری نے شام کی حکومت کو خبردار کیا ہے کہ اگر اس نے حالیہ طور پر زیربحث حلب میں نئی جنگ بندی کا احترام نہیں کیا تو اسے "نتائج" بھی بھگتنا ہوں گے۔

اقوام متحدہ میں فرانسیسی سفیر فرنسوا دیلاٹر کا کہنا ہے کہ حلب "قربانیوں کا شہر ہے جو بشار الاسد کے سامنے مزاحمت کا مرکز ہے"۔ انہوں نے واضح کیا کہ اس شہر کی "شام میں وہ ہی حیثیت ہے جو بوسنیا میں سرائیوو کی تھی"۔

دوسری جانب برطانوی مندوب میتھیو رائکرافٹ نے اجلاس کے انعقاد کا مطالبہ کرتے ہوئے واضح کیا کہ "حلب جل رہا ہے" اور یہ معاملہ "اولین ترجیح" سے متعلق ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں