.

سعودی عرب پٹرولیم کی پالیسی برقرار رکھے گا: وزیر پٹرولیم

ہمہ نوع قدرتی وسائل سے ویژن 2030 کو کامیاب بنانے کا عزم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے نئے وزیر تیل وقدرتی وسائل انجینیر خالد الفالح نے کہا ہے کہ وزارت پٹرولیم ویژن 2030ء کی روشنی میں پالیسیاں مرتب کررہی ہے۔ ان کی حکومت مقامی سطح پر تیل کے وسائل کے استعمال اور قدرتی وسائل کے تمام دستیاب ذرائع سے بھرپور طریقے سے استفادے کی کوششیں جاری رکھے گی تاکہ ویژن 2030ء کے معاشی اھداف حاصل کیے جاسکیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق ریاض میں ایک نیوز کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انجینیر الفالح کا کہنا تھا کہ وزارت پٹرولیم نئی اور موثر صنعتوں کے فروغ اور سعودی معیشت کو دن دگنی اور رات چگنی ترقی دینے کے لیے ترجیحی بنیادوں پر کوششیں جاری رکھے گی۔

ایک سوال کے جواب میں نو منتخب وزیر پٹرولیم نے کہا کہ ان کے محکمے کو "پٹرولیم اور قدرتی وسائل" کے نئے نام سے متعارف کرایا گیا ہے۔ وزارت پٹرولیم و قدرتی وسائل نئی صنعتوں کے قیام کے ذریعے شہریوں کے لیے باعزت روزگار کے نئے مواقع بھی پیدا کرے گی۔

انجینیر خالد الفالح کا کہنا تھا کہ وزارت پٹرولیم توانائی کی صنعتی شعبے کو وسعت دیتے ہوئے نئے صنعتی افق اورقدرتی وسائل سے استفادے کے لیے سرمایہ کاری کے نئے مواقع پیدا کرے گی۔ ان کا کہنا تھا کہ سعودی عرب کے پاس صرف تیل ہی نہیں بلکہ ہمہ نوع قدرتی وسائل کا بے بہا خزانہ موجود ہے۔ ان وسائل سے استفادہ کرکے ویژن 2030ء کے معاشی اہداف کا حصول ممکن بنایا جاسکتا ہے۔