.

کینیڈا میں خوفناک ’وحشی آگ‘ کے فضائی مناظر!

آتش زدگی سے 1600 مکان نذرآتش، ایک لاکھ افراد بے گھر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

کینیڈا کے جنگل میں گذشتہ نو روز سے جاری آتش زدگی کو خطے کی دہشت ناک آگ قرار دیا جا رہا ہے۔ "جھنمی" آگ، The Beast یعنی وحشی آگ سے اب تک کم سے کم 1600 مکان نذر آتش اور ایک لاکھ افراد بے گھر ہوچکے ہیں۔ کم وبیش لبنان کے کل پانچویں حصے کے برابر علاقہ اگ کی لپیٹ میں آچکا ہے۔ آگ پر قابو پانے کی کوششیں جاری ہیں مگر لگتا ہے کہ اس وحشی آگ پر قابو پانے کے لیے ایک ماہ کا عرصہ لگ سکتا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق امریکی خلائی تحقیقاتی ادارے "ناسا" کے مصنوعی سیاروں کی مدد سے بھی کینیڈا میں لگی آگ کے فضائی مناظر حاصل کیے گئے ہیں جن سے آگ کی ہولناکی کا بہ خوبی اندازہ ہوتا ہے۔

آگ پر قابو پانے کے لیے تمام ریاستی میشنری حرکت میں ہے۔ سیکڑوں فوجی، فائر بریگیڈ کے 500 اہلکار، 88 گاڑیوں، 15 ہیلی کاپٹر، آگ بجھانے کے لیے استعمال ہونے والے 16 طیارے دن رات آگ پر قابو پانے میں مصروف عمل ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ نے کینیڈین ذرائع ابلاغ کے حوالے سے بتایا ہے کہ آگ نے اب تک ایک ملین سے زاید درخت جلا ڈالے ہیں۔ "ساسکاچوان" کے علاقے میں آگ مزید 30 سے 40 کلومیٹر تک پھیلنے کا اندیشہ ہے جب کہ مغربی کینیڈا کے "البرٹا" کا 2000 کلومیٹر کا علاقہ آگ کے نتیجے میں بری طرح برباد ہوچکا ہے۔

جنوب مغربی کینڈا میں لگنے والی آگ کے نتیجے میں اب تک اربوں ڈالر کا نقصان ہوچکا ہے مگر اس کے حقیقی اسباب کا پتا نہیں چلایا جاسکا ہے۔ آگ کی لپیٹ میں آنے والا علاقہ ریتلے صحراء اور تیل کی دولت سے مالا مال ہے۔ "ووڈ بوفالو" کا علاقہ تیل کا مرکز ہے جہاں 6000 لبنانی باشندوں سمیت ہزاروں کی تعداد میں عرب تارکین وطن بھی قیام پذیر ہیں۔

درجہ حرارت میں اضافہ، 7 ارب ڈالر کا نقصان

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق "وحشی آگ" کے نتیجے میں جہاں بڑے پیمانے پر مادی نقصان ہوا ہے وہیں درجہ حرارت میں بھی غیرمعمولی اضافے کا خدشہ ہے۔ کینیڈا کے CBC News ٹیلی ویژن کی رپورٹ کے مطابق آگ لگنے سے البرٹا کے علاقے میں لاکھوں افراد بے گھر ہوئے ہیں مگر ساتھ ہی ساتھ درجہ حرارت 32.8 درجے سینٹی گریڈ سے تجاوز کرچکا ہے۔ ہوا میں گرمی شدت معمول سے زیادہ ہے اور ہوائی فی گھنٹہ 72 کلومیٹر کی رفتار سے چل رہی ہیں۔ جس کے نتیجے میں آگ تیزی کے ساتھ پھیل رہی ہے۔

گذشتہ جمعہ ور ہفتہ کے ایام میں بارش کے نتیجے میں البرٹا اور دیگر علاقوں میں گرمی کی شدت کا زور ٹوٹا مگر موسم صاف ہوتے ہی گرمی تیزی کے ساتھ بڑھنا شروع ہوگئی ہے۔ ماہرین کا خیال ہے کہ آگ مزید ایک ماہ تک جاری رہ سکتی ہے، جس کے نتیجے میں مزید لوگوں کے گھر ہونے کا اندیشہ ہے۔

خبر رساں ایجنسی "رائیٹرز" کے مطابق آتش زدگی کے نتیجے میں اب تک 7 ارب امریکی ڈالر کے مساوی نقصان ہوچکا ہے۔ کینیڈا میں یہ پہلی آتش زدگی نہیں۔ سنہ 2013ء میں البرٹا کے علاقے میں مہیب آتش زدگی کے نتیجے میں 6 ارب ڈالر کا نقصان ہوچکا ہے۔