پیرس حملوں کے ماسٹر مائنڈ کے بھائی کو مراکش میں قید

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مراکش کی انسداد دہشت گردی کی ایک عدالت نے پچھلے سال نومبر میں فرانس کے دارالحکومت پیرس میں دہشت گردی کے ماسٹر مائنڈ قرار دیے گئے شدت پسند عبدالحمید ابا عوض کے چھوٹے بھائی یاسین اباعوض کو دو سال قید کی سزا کا کا حکم دیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق یاسین اباعوض کے پاس مراکش کے ساتھ ساتھ بیلجیم کی شہریت بھی ہے۔ مراکش کی عدالت نے یاسین ابا عوض پر دہشت گردی اور انتہا پسندی کو فروغ دینے اور اپنے بھائی کی دہشت گردانہ کارروائیوں کے بارے میں حکام کو مطلع نہ کرنے کے الزام میں قید کی سزا سنائی ہے۔

عدالتی فیصلے کے موقع پر یاسین ابا عوض کے وکلاء نے اپنے موکل کو ہر انتہا پسندی کے الزامات سے بری الذمہ قرار دیتے ہوئے عدالت سے اس کی بریت کا مطالبہ اور کیا کہ ان کا موکل کسی قسم کی دہشت گردی میں ملوث ہےاور نہ ہی اس نے ایسا کوئی منصوبہ تیار کیا تھا۔

سزا پانے والے مبینہ شدت پسند یاسین ابا عوض کو مراکشی پولیس نے چند ماہ قبل جنوبی شہر اکادیر سے حراست میں لیا تھا۔ اس پر بیلجیم میں سرگرم دہشت گرد گروپوں کے ساتھ تعلق کے شبے میں گرفتار کیا گیا۔

قبل ازیں یہ اطلاعات بھی آئی تھیں کہ پچھلے سال نومبر میں فرانس میں دہشت گردی کی کارروائیوں کے دوران ہلاک ہونے والے شدت پسند عبدالحمید اباعوض نے مراکش میں قید پانے بھائی سے داعش میں شمولیت کا مطالبہ کیا تھا تاہم انہوں نے یہ مطالبہ مسترد کردیا تھا۔

دوران حراست یاسین نے اعتراف کیا ہے کہ اس نے بیرون ملک اسلام کا پرچم بلند کرنے کی خاطر جنگجوؤں کے کردار پر اپنے بڑے بھائی عبدالحمید ابا عوض سے متعدد مرتبہ بات چیت کی تھی۔ اس کا کہنا ہے کہ وہ بھی اپنے بھائی کی طرح فرانس اور بیلجیم میں دہشت گردی کی منصوبہ بندی پر غور کرتا رہا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں