.

یمن سے سعودی عرب پر بیلسٹک میزائل حملہ ’ننگی جارحیت‘ قرار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں آئینی حکومت کی بحالی کے لیے سرگرم عرب اتحاد کی جانب سے جاری کردہ ایک بیان میں انکشاف کیا گیا ہے کہ کل سوموار کو یمن سے سعودی عرب میں ایک بیلسٹک میزائل حملہ کیا گیا ہے۔ عرب اتحاد نے میزائل حملے کو یمنی باغیوں کی ننگی جارحیت قرار دیتے ہوئے اس کا سخت جواب دینے کی دھمکی دی ہے۔

سعودی عرب کی سرکاری پریس ایجنسی "واس" کے مطابق یمنن سے داغا گیا بیلسٹک میزائل مملکت میں ایک غیرآباد علاقے میں گر کر پھٹا ہے جس کے نتیجے میں کسی قسم کا جانی نقصان نہیں ہوا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق یمن سے میزائل حملے کے بعد سعودی عرب کی مسلح افواج نے فوری طور پر جائے وقوعہ کو اپنے گھیرے میں لے لیا۔

عرب اتحاد کی جانب سے جاری کردہ ایک بیان میں یمن سے سعودی عرب میں میزائل حملے کو ننگی جارحیت قرار دیتے ہوئے حوثی باغیوں اور مںحرف صدر عبداللہ صالح کو اس واقعے کا ذمہ دارقرار دیا۔ یہ میزائل حملہ ایک ایسے وقت میں کیا گیا ہے جب اتحادی ممالک عالمی برادری یمن میں قیام امن کے لیے کوشاں ہےاور کویت کی میزبانی میں مذاکرات کی کوششیں جاری ہیں۔

دوسری جانب یمنی حکومت نے باغیوں کی جانب سے سعودی عرب میں میزائل حملے کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت شدت پسند باغیوں کے خلاف زمان ومکان کی قید سے آزاد ہو کر کارروائی کرنے کا حق رکھتی ہے۔ حکومت کا کہنا ہے کہ باغیوں کی جانب سے جنگ بندی کی بار بار خلاف ورزیوں کی سختی سے روک تھام کی ضرورت ہے۔

حکومت نے عالمی برادری سے مطالبہ کیا کہ وہ حوثی باغیوں کو یمن میں انارکی پھیلانے اورامن بات چیت اور ملک استحکام کو داؤ پر لگانے کی سازشوں کی سختی سے روک تھام کرائے۔