.

مصری فضائی میزبان کی ڈوب مرنے کی پیش گوئی سچ ثابت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

موت ایک حقیقت ہے مگر کوئی ہیں جانتا کہ اس کی موت کب اور کہاں آئے گی۔ البتہ لوگ اپنی موت کے بارے میں پیشن گوئیاں کرتے رہتے ہیں۔ بعض لوگوں کی پیشگوئیاں درست ثابت ہوتی ہیں۔ اپنی موت کی پیشگوئی سمندر میں گر کر تباہ ہونے والے مصری ہوائی جہاز کی فضائی میزبان سمر عزالدین نے بھی کر رکھی تھی۔ اس کی یہ پیشین گوئی درست ثابت ہوئی۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق نوجوان فضائی میزبان سمر عزالدین نے پچھلے سال 26 ستمبر کو سماجی رابطے کی ویب سائیٹ ’’فیس بک‘‘ کے اپنے صفحے پر ایک خیالی تصویر پوسٹ کی جس میں اس نے دکھایا کہ وہ سمندر میں کھڑی ہے جب کہ اس کے پیچھے اس کا جہاز پانی میں ڈوب رہا ہے۔

صرف یہی نہیں بلکہ سمر نے اپنی فیس بک وال پر قرآنی آیات، موت اور حسد سے متعلق آیات و احادیث اور ادعیہ ماثورہ بھی پوسٹ کر رکھی تھیں۔ وہ اپنے ساتھیوں سے بات چیت میں بھی اکثر یہ کہا کرتی تھی کہ اسے یقین ہے کہ اس کی موت پانی میں ڈوب مرنے سے ہوگی۔ اس کے ساتھی اور دیگر فضائی میزبان موت سے متعلق باتوں کو مذاق میں ٹال دیتے تھے مگر گذشتہ روز مصری مسافر طیارے کی سمندر میں گر کر تباہ ہونے کی خبر نے سمرعزالدین کی سہیلیوں اور دیگر دوست احباب کو بھی دکھی کردیا جب انہیں یاد آیا کہ سمر نے بہت پہلے اور تکرار کے ساتھ اپنی موت کی خود ہی پیشن گوئی کر رکھی تھی۔

سمرکے ایک کولیگ تامر عبدہ امین نے اس کی سوشل میڈیا پر موت سے متعلق پوسٹ کردہ تصویر پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ سمرنے یہ تصویر چار بار مختلف اوقات میں پوسٹ کی۔ پہلی بار مئی 2014ء کو جب اس نے مصری فضائیہ میں ملازمت کا آغاز کیا۔ پھر جون 2015ء، تیسری جنوری اور چوتھی بار گذشہ مارچ میں پوسٹ کی گئی۔ عبدہ امین نے بتایا کہ سمر کے ہاں اپنی موت کے بارے میں گہرا احساس تھا اور اسے یقین تھا کہ اس کی موت پانی میں ڈوبنے سے واقع ہوگی۔

خیال رہے کہ سمر عزالدین اس بد قسمت ہوائی جہاز کی میزبان تھیں جو گذشتہ روز فرانس کے شہر پیرس سے قاہرہ آتے ہوئے یونان کے قریب سمندر میں گر کر تباہ ہوگیا۔ طیاے پر عملے کےافراد سمیت 66 افراد سوار تھے۔

سمر