کیا جواد ظریف کی ایک بیوی ایرانی جیل میں قید ہے؟

شدت پسند رہ نما کی درفطنی پرایران کے سیاسی ایوانوں میں زلزلہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

ایران میں حکومت اور مجلس شوریٰ میں غالب اکثریت حاصل کرنے والے اصلاح پسندوں اور ریاست کے کلیدی اور منصوبہ ساز اداروں پر قابض بنیاد پرست عناصر کے درمیان اختیارات کی رسا کشی کی جنگ تو کئی سال سے جاری ہے مگر بعض اوقات اس جنگ میں کوئی ایسا انکشاف ہوتا ہے جو ایران کے سیاسی ایوانوں میں ایک نیا زلزلہ برپا کردیتا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق ان دنوں ایران کے سیاسی ایوانوں میں زلزلہ اس وقت برپا ہوا جب ایک بنیاد پرست رہ نما اور ’’عماریون‘‘ ویب سائیٹ کے ڈائریکٹر محمد حسین رستمی نے یہ شوشہ چھوڑا کہ وزیر خارجہ جواد ظریف نے ایک صحافیہ کے ساتھ خفیہ شادی رچا رکھی ہے اور وہ صحافیہ ان دنوں جاسوسی کے الزام میں تہران کی ایک جیل میں قید ہے۔

رستمی کا دعویٰ ہے کہ وزیر خارجہ کی دوسری بیوی کا نام آفرین تیشت ساز ہے اور اسے پچھلے برس نومبر میں جاسوسی کے الزام میں گرفتار کیا گیا تھا۔ اس پر بعض دوسرے اصلاح پسند صحافیوں کے ساتھ مل کر ایک دشمن ملک کے لیے مخبری کرنے جیسے سنگین الزامات عاید کیے گئے ہیں۔

صرف یہی نہیں بلکہ محمد حسین رستمی نے وزیرخارجہ جواد ظریف پر ایران میں غیر ملکی اثرو نفوذ بڑھانے کا بھی الزام عاید کیا ہے۔ سماجی رابطے کی ویب سائیٹ ’فیس بک‘ کے صفحے پر پوسٹ کردہ ایک بیان میں رستمی نے لکھا کہ ’لیجیے! میں سیاسی ایوانوں میں ایک نیا زلزلہ برپا کرنے لگا ہوں۔ وہ یہ کہ ہمارے وزیرخارجہ محمد جواد ظریف نے ایک جاسوسہ کے ساتھ دوسری اور خفیہ شادی کر رکھی ہے۔ وہ جاسوسی کوئی اور نہیں بلکہ ایران کی معروف صحافیہ آفرین تیشت ساز ہے جو تہران کی ایک جیل میں قید ہے۔‘

انہوں نے جواد ظریف کو مخاطب کرتے ہوئے لکھا ہے کہ ’’جناب جواد ظریف صاحب، کیا آپ کوعلم ہے کہ غیرملکی اثرو نفوذ آپ کے بستر تک پہنچ گیا ہے؟ وہ مزید لکھتے ہیں کہ سرکاری دستاویزات اور آپ کے دوستوں سے یہ بات ثابت ہوئی ہے کہ آپ کی دوسری خفیہ اہلیہ آٖفرین تیشت ساز ایک دوسرے ملک کی جاسوسہ ہے۔"

حسین رستمی کے اس متنازعہ بیان پر فیس بک پر تبصروں کا ایک طوفان امڈ آیا۔ لوگوں نے کثرت کے ساتھ یہ سوال اٹھایا ہے کہ رستمی کے پاس جواد ظریف کی خفیہ شادی کا کیا ثبوت ہے۔ نیز جواد ظریف کی جانب سے اس دعوے کی ترید نہ ہونا کیا اسے درست مانا جانے کے لیے کافی ہے؟

دوسری جانب ایران کے اصلاح پسند طبقے کے محمد حسین رستمی کے بیان کو جعلی اور من گھڑت قرار دیتے ہوئے مسترد کردیا ہے۔ اصلاح پسندوں کا کہنا ہے کہ رستمی کا بیان ایران میں کامیاب سفارت کاری کے آئیکون محمد جواد ظریف کو بدنام کرنے کی گہری سازش ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ جواد ظریف نے کوئی خفیہ شادی کی ہے اور نہ ہی ان کی کوئی دوسری بیوی ہے۔ رستمی کے اس بیان کا درپردہ مقصد جواد ظرف کومتنازع بنانا اور یہ باور کرانا ہے کہ وہ ایک جاسوس خاتون کے شوہر ہیں۔

ایران میں سوشل میڈیا پر یہ بحث بڑی تیزی سے جاری ہے مگر اصلاح پسند حلقوں کی طرف سے جواد ظریف کی خفیہ شادی کی خبروں کی سختی سے تردید کرتے ہوئے کہا جا رہا ہے کہ اس طرح کی من گھڑت خبریں سابق صدر احمدی نژاد کے دور میں بھی سامنے آتی رہی ہیں۔

تاہم عماریون ویب سائیٹ کے مطابق جواد ظریف نے پہلی شادی 1979ء کو مریم ایمانیہ سے کی۔ آفرین تیشت ساز کے ساتھ ان کی خفیہ شادی بہت بعد میں ہوئی ہے۔ مریم ایمانیہ کو بھی اس دوسری شادی کا علم نہیں ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں