.

منیٰ میں بھگدڑ کی جگہ جمرات تک براہ راست سڑک بنے گی

حجاج نئی سڑک کے ذریعے جمرات کے علاقے میں بے روک داخل ہوسکیں گے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مسجد الحرام اور مکہ مکرمہ کی تعمیرو توسیع کے منصوبے کے تحت منیٰ میں شارع نمبر 206 کو جمرات تک براہ راست جانے کے لیے کھلی سڑک بنایا جارہا ہے۔اسی جگہ گذشتہ سال بھگدڑ کا افسوس ناک سانحہ پیش آیا تھا جس میں سیکڑوں حجاج کرام جاں بحق ہوگئے تھے۔

ذرائع کے مطابق اب اس نئی سڑک پر سے شیطان کو کنکریاں مارنے کے لیے جانے والے زائرین کو کسی انٹرسیکشن کو عبور کرنے کی ضرورت نہیں ہوگی اور ان کی براہ راست جمرات کے علاقے میں رسائی ہوگی۔

ان ذرائع نے مزید بتایا ہے کہ اس منصوبے پر مکہ اور مقدس مقامات کی ترقی کا ادارہ عمل درآمد کررہا ہے اور اس کو 2 ستمبر تک مکمل کر لیا جائے گا۔اس شاہراہ پر آمدورفت میں حائل ہونے والے خیموں کو یہاں سے ختم کردیا جائے گا اور انھیں منیٰ میں ایک اور خالی جگہ پر منتقل کردیا جائے گا۔اس جگہ پر پہلے سرکاری دفاتر واقع تھے اور انھیں خیمہ بستی سے باہر منتقل کیا جاچکا ہے۔

اسی سے متعلقہ ایک اور خبر یہ ہے کہ ایک آسٹریلوی کمپنی کے تیار کردہ نئی قسم کے ائیر کنڈیشنرز سے منیٰ میں اس سال حج کے دوران درجہ حرارت کو 33 ڈگری سینیٹی گریڈ سے 21 ڈگری سینٹی گریڈ تک لانے میں مدد ملے گی۔

سعودی عرب کی وزارت خزانہ کے تحت سرکاری انوسٹمنٹ فنڈ ( پی آئی ایف) نے اس کمپنی کے ساتھ ان ائیر کنڈیشنروں کی تنصیب کا ٹھیکا کیا ہے۔ واضح رہے کہ یہ فنڈ منیٰ میں حجاج کرام کی خیمہ بستی میں ائیر کنڈیشنرز کی تنصیب کا ذمے دار ہے۔