.

تیونس : الغنوشی دوبارہ النہضہ تحریک کے سربراہ منتخب

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

تیونس میں پیر کے روز النہضہ تحریک کے تاریخی سربراہ راشد الغنوشی کو توقع کے مطابق ایک مرتبہ پھر تحریک کا سربراہ منتخب کرلیا گیا ہے۔ گزشتہ ہفتے کے اختتام پر تحریک کی دسویں کانفرنس کا انعقاد کیا گیا تھا جس میں تحریک کو ایک "شہری جماعت" میں تبدیل کرنے کے فیصلے کے علاوہ نئی قیادت کے انتخاب اور اس کی کارکردگی کا جائزہ اور آئندہ چار سالوں کے لیے تحریک کی حکمت عملی پر غور کیا گیا۔

سربراہ کے انتخاب کے سلسلے میں راشد الغنوشی نے 800 ووٹ حاصل کیے جب کہ تحریک کی مجلس شوری کے سربراہ فتحی العیادی کو 229 ووٹ مل سکے۔

جماعت کی ایک خاتون ذمہ دار نے بتایا کہ ابتدائی طور پر تحریک کے سربراہ کے عہدے کے لیے آٹھ امیدوار تھے جن میں سے بعض نے مقابلے سے دست بردار ہونے کا اعلان کردیا۔

2011 میں سابق صدر زین العابدین بن علی کو اقتدار سے ہٹائے جانے کے بعد پہلے قانون ساز انتخابات میں النہضہ تحریک نے کامیابی حاصل کی تھی۔ حکمراں اتحاد میں شامل "نداء تیونس" پارٹی میں پھوٹ کے بعد النہضہ تحریک پارلیمنٹ میں پہلے نمبر کی سیاسی طاقت بن چکی ہے۔