.

اسرائیل میں مخنثوں کا مقابلہ حسن.. فاتح فلسطینی نژاد !

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیل میں مخنثوں (مرد سے عورت میں تبدیل ہونے والوں) کے پہلے مقابلہ حسن میں جیت کا تاج ایک فلسطینی خاتون تعلین ابو حنا کے سر پر سج گیا۔ تعلین کا تعلق شمالی اسرائیل کے شہر الناصرہ سے ہے۔

اسرائیلی میڈیا کے مطابق وہ اگست میں اسپین میں ہونے والے مخنثوں کے عالمی مقابلہ حسنTrans Star International میں اسرائیل کی نمائندگی کرے گی جو اس نوعیت کے کسی بھی بین الاقوامی مقابلے میں اسرائیل کی پہلی شرکت ہوگی۔

انگریزی زبان کے اسرائیلی اخبارThe Times of Israel کے مطابق 21 سالہ بیلے ڈانسر تعلین کے ساتھ حالیہ مقابلے میں مختلف نسلوں اور مذاہب سے تعلق رکھنے والی 11 دیگر امیدوار بھی شریک تھیں جن میں ایک مسلمان اور ایک روسی نژاد بھی شامل ہیں۔

مقابلے میں کیرولین خوری نامی ایک 26 سالہ فلسطینی نے بھی شرکت کی۔ مغربی جلیل کے علاقے کے قریب واقع شہر "طمرہ" سے تعلق رکھنے والی کیرولین فیشن ماڈل ہے۔ دو سال قبل فلسطینی گلوکار محمد عساف کے ساتھ اس کی تصویر نے فلسطینی مسلم حلقوں میں غم و غصے کی لہر دوڑا دی تھی۔

مخنثوں کے اسرائیلی مقابلہ حسن کو جیتنے والی تعلین ابو حنا کو بنکاک میں پلاسٹک سرجری کے اخراجات کی مد میں 15 ہزار ڈالر دیے جائیں گے۔ اس کے علاوہ فضائی سفر کا ٹکٹ اور فائیواسٹار ہوٹل میں قیام بھی فراہم کیا جائے گا۔