.

بحر متوسط میں 700 تارکین وطن کے ڈوب مرنے کا خدشہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لیبیا کی حدود میں بحر متوسط میں تین کشتیوں کے حادثات میں کم سے کم سات سو غیر قانونی تارکین وطن کی ہلاکت کا خدشہ ہے۔

اقوام متحدہ کے ہائی کمشنر برائے مہاجرین کے ترجمان فیڈریکو فوسی نے اتوار کے روز ایک بیان میں بتایا ہے کہ ہمیں ہلاکتوں کی درست تعداد کا یقین نہیں ہے لیکن اس ہفتے کے دوران تین چھوٹے جہازوں کے حادثات میں سات سو کے لگ بھگ افراد ڈوب مرے ہیں۔ان میں سے ایک جہاز پر پانچ سو سے زیادہ افراد سوار تھے''۔

لیبیا کے ساحلی علاقے میں جمعرات کی صبح مچھیروں کی ایک کشتی سمندر میں الٹ گئی تھی اور اس حادثے میں کم سے کم پانچ سو افراد ہلاک ہوگئے تھے۔اس حادثے میں زندہ بچ جانے والے افراد نے بتایا ہے کہ مہلوکین میں کم سے کم چالیس بچے تھے اور ان میں بعض نومولود بھی تھے۔

گذشتہ بدھ کے روز ایک اور کشتی بحر متوسط میں ڈوب جانے سے کم سے کم ایک سو افراد لاپتا ہوگئے تھے اور جمعہ کو پیش آئے ایک حادثے کے بعد پینتالیس لاشیں نکالی گئی تھیں۔اس تیسری کشتی میں سوار اور افراد بھی ہلاک ہوئے ہیں۔

سسلی میں غیر سرکاری تنظیم ''سیو دا چلڈرن'' کی ترجمان گیو وانا ڈی بینڈیٹو نے ایک بیان میں کہا ہے کہ بحری حادثات میں مرنے والوں کی تعداد کی تصدیق ناممکن ہے۔ تاہم زندہ بچ جانے والے افراد نے بتایا ہے کہ لیبیا کے شہر صبراتہ سے قریباً گیارہ سو افراد بدھ کو مچھیروں کی دو کشتیوں اور ایک چھوٹے جہاز پر سوار ہوئے تھے''۔

انھوں نے بتایا ہے کہ ''پہلی کشتی پر قریباً پانچ سو افراد سوار تھے۔اس سے دوسری کشتی کو باندھ کر کھینچا جا رہا تھا۔اس پر بھی پانچ سو افراد سوار تھے لیکن اس دوسری کشتی نے ڈوبنا شروع کردیا۔بعض لوگوں نے تیر کر پہلی کشتی پر سوار ہونے کی کوشش کی اور بعض نے دونوں کشتیوں کے درمیان رسے کو پکڑ لیا تھا''۔

زندہ بچ جانے والے افراد کے مطابق پہلی کشتی کے سوڈانی کپتان نے رسے کو کاٹ دیا۔اس سے ایک عورت گلا گھونٹنے سے ہلاک ہوگئی اور دوسری کشتی فوری طور پر ڈوب گئی۔اس میں سوار افراد کو چاروں طرف سے باندھا گیا تھا جس سے ان کے لیے بچ نکلنے کا کوئی موقع نہیں رہا تھا۔

اطالوی میڈیا کی رپورٹس کے مطابق سوڈانی کپتان اور تین مشتبہ انسانی اسمگلروں کو اٹلی کی بندرگاہ پوزالو پہنچنے پر گرفتار کر لیا گیا ہے۔ان حادثات میں بچ جانے والے افراد کو بھی پوزالو پہنچا دیا گیا ہے اور انھوں نے ہی ان حادثات کی تفصیل بیان کی ہے۔