.

میکسیکو کے فٹ بال اسٹار پولیس کارروائی کے بعد بازیاب

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

میکسیکو میں پولیس نے فٹ بال کے قومی کھلاڑی ایلن پولیڈو کو اغواکاروں کے چنگل سے بہ حفاظت بازیاب کر لیا ہے۔

پچیس سالہ پولیڈو کو ہفتے کی شب ان کے آبائی شہر سیوڈاڈ وکٹوریا کے نواح میں مسلح افراد نے اغوا کر لیا تھا۔وہ اس وقت ایک پارٹی میں شرکت کے بعد گھر واپس جا رہے تھے۔پولیس اور دوسرے حکام نے بتایا ہے کہ فٹ بال اسٹار کو ملک کی شمال مشرقی سرحدی ریاست ٹامولیپاس میں اتوار کو نصف شب سے چندے قبل ایک بڑی کارروائی کے بعد آزاد کرا لیا گیا ہے۔

وہ سوموار کو علی الصباح ریاستی پولیس کے دفاتر کے باہر صحافیوں کے سامنے نمودار ہوئے ہیں۔اس موقع پر ان کے ساتھ ٹامولیپاس کے گورنر ایجیڈیو ٹوری کانٹو بھی موجود تھے۔جب ان سے صحافیوں نے سوال کیا کہ وہ کیسے ہیں تو پولیڈو نے جواب دیا:''اللہ کا شکر ہے ،میں بالکل ٹھیک ٹھاک ہوں''۔ان کے دائیں ہاتھ اور بازوؤں پر پٹیاں بندھی ہوئی تھیں۔

پولیڈو نے باقی سوالوں کا جواب دینے سے انکار کردیا اور وہ ایک اسپورٹس گاڑی میں سوار ہو کر وہاں سے چلے گئے۔ٹامولیپاس کے سکیورٹی رابطہ گروپ نے ایک بیان میں بتایا ہے کہ فٹ بالر کو اغوا کاروں کی حراست سے چھڑانے کی کارروائی میں ریاستی اور وفاقی فورسز نے حصہ لیا ہے اور ایک مشتبہ شخص کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔

یادرہے کہ پولیڈو نے 2014ء میں کھیلے گئے فٹ بال کے عالمی کپ میں میکسیکو کی نمائندگی کی تھی۔ان کی محفوظ بازیابی پر ان کے یونانی کلب اولمپیاکوس نے بھی خوشی کا اظہار کیا ہے اور کھلاڑی کے اغوا پر تشویش اور ہمدردی کا اظہار کرنے والوں کا شکریہ ادا کیا ہے۔

ٹامولیپاس میں اغوا کا یہ واقعہ ریاستی گورنر کے انتخاب کے لیے پولنگ سے ایک ہفتے قبل رونما ہوا ہے۔میکسیکو کی اس ریاست کی سرحد امریکی ریاست ٹیکساس سے ملتی ہے۔اس ریاست میں منشیات فروشوں اور بھتا خوروں نے اندھیرنگری مچا رکھی ہے اور منشیات کا دھندا کرنے والے دوکارٹلز گلف اور زیٹاس کے درمیان ریاست پر کنٹرول کے لیے جنگ جاری ہے۔یہ دونوں تنظیمیں چوری ،بھتاخوری اور اغوا کی وارداتوں میں بھی ملوّث ہیں۔