روس خلیجی ممالک اور ایران میں کشیدگی ختم کرانے کو تیار

ایران کے ساتھ قریبی تعلقات استوار کرنے کا معاملہ زیر غور نہیں: سعودی وزیر خارجہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی وزیر خارجہ عادل الجبیر نے کہا ہے کہ روس نے ایران اور خلیجی ریاستوں کے درمیان کشیدگی ختم کرانے پر آمادگی ظاہر کی ہے۔

وہ منگل کے روز جدہ میں خلیج تعاون کونسل (جی سی سی) کے اجلاس کے بعد صحافیوں سے گفتگو کررہے تھے۔البتہ انھوں نے واضح کیا ہے کہ ایران کے ساتھ قریبی تعلقات استوار کرنے کا معاملہ زیر غور نہیں ہے۔

العربیہ نیوز چینل کی رپورٹ کے مطابق سعودی وزیر خارجہ نے کہا کہ ایران کی خلیجی ریاستوں میں مداخلت اور دہشت گردوں کے لیے حمایت نے مصالحت کو ناممکن بنا دیا ہے۔

انھوں نے خطے کے تنازعات کا شکار دوسرے ممالک کے بارے میں بھی اظہار خیال کیا ہے۔انھوں نے بتایا کہ یمن میں جاری بحران کے سیاسی حل کے لیے بہت سے ممالک کام کررہے ہیں۔لیبیا میں جاری تنازعے سے متعلق ان کا کہنا تھا کہ خلیجی ممالک کا وہاں قومی اتحاد کی حکومت سے متعلق مذاکرات شروع کرنے کا کوئی پروگرام نہیں ہے۔

واضح رہے کہ لیبیا میں اس وقت تین حکومتیں کام کررہی ہیں۔دارالحکومت طرابلس میں ایک جانب اسلامی گروپوں پر مشتمل فجر لیبیا کی حکومت ہے اور اقوام متحدہ کی ثالثی میں حال ہی میں تشکیل پانے والی حکومت نے بھی اپنے دفاتر قائم کررکھے ہیں لیکن اس کی ابھی تک عمل داری قائم نہیں ہوسکی ہے۔مشرقی شہر طبرق میں عبداللہ الثنی کی قیادت میں ایک تیسری حکومت قائم ہے اور اس کی مشرقی علاقوں میں عمل داری ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں