.

مصری تباہ شدہ طیارے کے بلیک باکسز کی پیرس آمد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر کے تحقیقات کاروں کا کہنا ہے کہ گذشتہ ماہ بحر متوسط میں گر کر تباہ ہونے والے مسافر طیارے کے دونوں بلیک باکسز پیرس پہنچا دیے گئے ہیں جہاں اب ٹیکنیشن ان کی مرمت کی کوشش کریں گے۔

ان دونوں بلیک باکسز کو شدید نقصان پہنچ چکا ہے اور مصری تحقیقات کار دونوں ریکارڈرز میں سے کوئی بھی معلوماتی ڈیٹا نکالنے میں ناکام رہے ہیں۔اس لیے مصری تحقیقاتی کمیٹی نے کاک پٹ وائس ریکارڈر اور فلائٹ ڈیٹا ریکارڈر کے الیکٹرانک بورڈز کو سوموار کے روز فرانس روانہ کردیا ہے۔

ابھی تک اس حادثے کی وجوہ معلوم نہیں ہوسکی ہیں۔طیارے کے ہوا بازوں نے حادثے سے قبل کوئی انتباہی کال نہیں کی تھی اور نہ ابھی تک کسی گروپ نے اس مسافر طیارے کو مار گرانے کا دعویٰ کیا ہے۔

فرانسیسی بحری جہاز لاپلیس کی مدد سے ایک ہفتے قبل مصر کی قومی فضائی کمپنی کے مسافر طیارے کے کاک پٹ کا وائس ریکارڈر بحر متوسط میں تین ہزار میٹر کی گہرائی سے نکالا گیا تھا۔اس وائس ریکارڈر میں کاک پٹ میں ہونے والی آخری تیس منٹ کی گفتگو کا ریکارڈ ہونا چاہیے۔اس میں انجن ،پروں اور کیبن پر دباؤ سے متعلق ٹیکنیکل معلومات بھی ہوں گی۔

مصر للطیران کا یہ مسافر طیارہ 19 مئی کو علی الصباح پیرس سے قاہرہ آتے ہوئے بحر متوسط میں گر کر تباہ ہو گیا تھا۔اس میں سوار تمام 56 مسافر اور عملے کے 10 ارکان ہلاک ہوگئے تھے۔ایک ماہ تک شبانہ روز تلاش کے بعد اس کے بلیک باکسز کا سراغ لگایا جا سکا تھا۔