.

یمن:المکلاء میں تین بم دھماکوں میں 38 فوجی ہلاک

داعش نے حملوں کی ذمہ داری قبول کرلی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے المکلاء شہر میں گذشتہ روز ہونے والے تین سلسلہ وار بم دھماکوں کے نتیجے میں مارے جانے والے یمنی فوجیوں کی تعداد 38 ہوگئی ہے۔ دوسری جانب شدت پسند تنظیم دولت اسلامی’داعش‘ نے ان بم دھماکوں کی ذمہ داری قبول کی ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق دہشت گردوں کی جانب سے المکلا شہر کے دیس المکلا میں دو سیکیورٹی چیک پوسٹوں اور ملٹری کمان کی ایک عمارت میں دو الگ الگ دھماکے کیےگئے جس کے نتیجے میں کم سے کم اڑتیس فوجی ہلاک اور درجنوں افراد زخمی ہوئے ہیں۔ زخمیوں میں عام شہری بھی شامل ہیں۔

تیسرا دھماکہ المکلا کے مغرب میں الفوۃ کے مقام پر کیا گیا۔ اس کارروائی میں بھی فوجیوں کو نشانہ بنایا گیا ہے۔

ادھر داعش کی ترجمان قرار دی جانے والی آن لائن نیوز ایجنسی ’اعماق‘ کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ المکلاء میں ہونے والے بم دھماکے تنظیم کے جنگجوؤں کی جانب سے کیے ہیں جن میں انسداد دہشت گردی اور ایلیٹ فورس کو نشانہ بنایا گیا۔

ذرائع کے مطابق پہلا دھماکہ خود کش تھا اور خود کش بمبار نے دیس المکلا کالونی میں گھس کر افطاری میں مصروف فوجیوں کے قریب کود کو دھماکہ سے اڑا دیا، جب کہ دوسرا دھماکہ ایک بمبار نے بارود سے بھری کار کے ذریعے کیا جس میں الفوہ کے مقام کونشانہ بنایا گیا۔

تیسرے دھماکے کے بارے میں امکان ہے کہ وہ ایک چیک پوسٹ کے قریب نصب بم سے کیا گیا جس کے نتیجے میں بڑی تعداد میں فوجیوں کا جانی نقصان ہوا ہے۔

خیال رہے کہ المکلا شہر ماضی میں القاعدہ کا گڑھ رہا ہے۔ القاعدہ نے گذشتہ اپریل میں اس شہر پر قبضہ کرلیا تھا۔