.

نئی حزب اللہ کو سر اٹھانے کی اجازت نہیں دیں گے: یمن

ایران خطے میں نفرت کی سیاست بند کرے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے وزیراعظم احمد بید بن دغر نے باغیوں کو نکیل ڈالنے اور انہیں شکست فاش سے دوچار کرنے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ ان کا ملک خطے میں کسی نئی حزب اللہ کو سر اٹھانے کی اجازت نہیں دے گا۔ ان کا کہنا تھا کہ یمن کے دفاع کا آغاز عدن سے ہوا ہے اور اختتام مران میں ہوگا۔

الحدث ٹی وی چینل کی رپورٹ کے مطابق بن دغر نے ان خیالات کا اظہار عدن میں المعاشیق محل میں مقامی سیاسی اور عسکری قیادت سے ملاقات کے دوران کیا۔ بن دغر نے پورے یمن کو باغیوں سے چھڑانے کا عزم ایک ایسے وقت میں کیا ہے کہ عدن سے باغیوں کی شکست کو ایک سال مکمل ہوچکا ہے۔

وزیراعظم احمد عبید بن دغر کا کہنا تھا کہ یمن کی تمام قوتوں کو آئینی اداروں اور فوج کے ساتھ کھڑا ہونا پڑے گا کیونکہ ہمارا دشمن اب بھی گھات لگائے بیٹھا ہے اور وہ پورے خطے کو عدم استحکام سے دوچار کرنا چاہتا ہے۔

بن دغر نے کہا کہ ان کا ملک یمن میں کسی دوسری حزب اللہ کو سراٹھانے کی اجازت نہیں دے گا۔ انہوں نے کہا کہ خطے میں جاری کشیدگی کے پیچھے ایان کی سازشیں کار فرما ہیں، ایران ہی نے یمن میں حوثی باغیوں کو بغاوت پر اکسایا۔ یمن کے اندرونی معاملات میں ایران کی مداخلت بند کرنے کا وقت آگیا ہے۔ ایران خطے میں انارکی پھیلانے اور نفرت کی سیاست کا سلسلہ بند کرے۔