.

نیس میں حملہ آور تیونسی نژاد فرانسیسی شہری نکلا!

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فرانسیسی پولیس نے جمعرات کے روز نیس شہر میں حملہ کرنے والے ٹرک ڈرائیور کے تعارف کی سرکاری طور پر تصدیق کر دی ہے۔ پولیس کے مطابق 31 سالہ تیونسی نژاد فرانسیسی کا نام محمد لحویج بو ہلال ہے اور وہ نیس شہر میں ہی رہتا تھا۔ منشیات استعمال کرنے کا عادی بوہلال پرتشدد کاررائیوں کے ارتکاب کے سبب فرانس کی پولیس کے ریکارڈ میں معروف ہے۔

سیکورٹی ذرائع کے مطابق نیس کا حملہ آور شادی شدہ ہے اور اس کے تین بچے بھی ہیں۔

مذکورہ ٹرک ڈرائیور نے فرانس کے جنوب مشرقی شہر نیس میں لوگوں کو کچل ڈالنے کی کارروائی کے دوران اپنے پستول سے متعدد گولیاں بھی چلائی تھیں۔ بعد ازاں حملہ آور کو ہلاک کردیا گیا۔

واقعے کی تحقیقات کے بارے میں مطلع ذرائع کا کہنا ہے کہ کارروائی میں استعمال کیے جانے والے ٹرک سے ایک بم ملا جو ابھی دھماکے کے لیے تیار نہیں کیا گیا تھا۔ اس کے علاوہ جعلی ہتھیار بھی برآمد کیے گئے۔ ذرائع کے مطابق حملہ آور نے کارروائی سے دو روز قبل اس ٹرک کو کرائے پر لیا تھا۔

مقامی حکومت کے ذمہ دار سیباستیان ہومبرٹ نے فرانس انفو ریڈیو کو بتایا ہے کہ پولیس نے حملہ آور کو گولیاں مار کر ہلاک کیا جو لوگوں کو کچلنے کے واسطے نیس شہر کی Promenade des Anglais اسٹریٹ کے ساتھ اپنے ٹرک کو 100 میٹر سے زیادہ فاصلے تک دوڑاتا ہوا لے گیا۔

پیرس میں سرکاری استغاثہ نے اعلان کیا ہے کہ انسداد دہشت گردی کی شاخ نیس شہر میں اس حملے کی تحقیقات کرے گی۔

سیکورٹی ذرائع کے مطابق فرانسیسی حکام کو جمعرات کے روز نیس میں حملے میں استعمال ہونے والے ٹرک سے تیونسی نژاد فرانسیسی شہری کی شناخت سے متعلق کاغذات بھی ملے۔ ذرائع کا کہ "ٹرک ڈرائیور کی شناخت جاننے کی کارروائی ابھی جاری ہے"۔