استنبول کے ڈپٹی میئر سر میں گولی لگنے سے شدید زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

استنبول کے علاقے سسلی (صقلیہ) کے ڈپٹی میئر کو ایک نامعلوم حملہ آور نے سر میں گولی مار کر شدید زخمی کردیا ہے اور اسپتال میں ان کی حالت تشویش ناک بتائی جاتی ہے۔

ترکی کے ٹیلی ویژن چینل این ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق سوموار کے روز حملہ آور ڈپٹی میئر سیمل کنداس کے دفتر میں گھس آیا تھا اور اس کے بعد گولی چلنے کی آواز سنی گئی تھی۔ترکی کی حزب اختلاف کی بڑی جماعت ری پبلکن پیپلز پارٹی (سی ایچ پی) کا سسلی کے بلدیاتی اداروں (مقامی حکومت) پر کنٹرول ہے۔

فوری طور پر یہ واضح نہیں ہوا ہے کہ آیا ڈپٹی میئر پر اس قاتلانہ حملے کا ترکی میں ناکام فوجی بغاوت سے کوئی تعلق ہے۔پیپلز پارٹی اور حزب اختلاف کی دوسری جماعتوں نے صدر رجب طیب ایردوآن کی حکومت کا تختہ الٹنےکی اس ناکام سازش کی مذمت کی تھی۔

جمعے اور ہفتے کی درمیانی شب بغاوت برپا کرنے والے فوجیوں اور حکومت کی وفادار فورسز کے درمیان جھڑپوں میں دو سو سے زیادہ افراد ہلاک اور سیکڑوں زخمی ہوگئے تھے۔اس ناکام بغاوت کے بعد سے ترکی میں کشیدگی پائی جارہی ہے۔تاہم صدر طیب ایردوآن کی حکومت کا کہنا ہے کہ اس نے صورت حال پر مکمل قابو پا لیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں