.

جرمنی : مسافر ٹرین میں کلہاڑی سے حملہ ، 4 افراد شدید زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

جرمنی کے صوبے باویریا کے وزیر داخلہ کے مطابق ایک 17 سالہ افغان پناہ گزین نے مسافر ٹرین میں کلہاڑی اور خنجر سے حملہ کر کے 4 افراد کو شدید زخمی کردیا۔ بعد ازاں پولیس کی فائرنگ سے حملہ آور مارا گیا۔ جرمن ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے وزیر داخلہ یوآخم ہیرمان نے کہا کہ حملے کی وجوہات کے حوالے سے ابھی کچھ کہنا قبل از وقت ہوگا۔ خیال ہے کہ حملہ آور ولفسبرگ شہر کے نزدیک واقع قصبے اوشنفرٹ میں رہتا تھا۔

یہ واقعہ فرانس کے شہر نیس میں ایک تیونسی نژاد شہری کی جانب سے قومی دن کی تقریب میں شریک افراد پر ٹرک چڑھا دینے کے واقعے کے چند روز بعد پیش آیا ہے۔ اُس کارروائی میں 84 افراد ہلاک ہوگئے تھے۔

غالب گمان ہے کہ اس تازہ ترین حادثے کے نتیجے میں یورپ میں انفرادی حملہ آوروں کی جانب سے کیے جانے والے حملوں سے متعلق خوف اور اندیشے گہرے ہوجائیں گے۔ اس کے علاوہ جرمن چانسلر اینجلا مرکل کو سیاسی دباؤ کا بھی سامنا ہوگا جنہوں نے گزشتہ برس جرمنی میں لاکھوں پناہ گزینوں کا خیرمقدم کیا تھا۔

ولفسبرگ شہر کے نواح میں ایک اسٹیشن پر ٹرین کے رکنے کے بعد حملہ آور ٹرین سے فرار ہوگیا، پولیس کی جانب سے راستہ روکے جانے پر اس نے جوابی حملے کی کوشش بھی کی تھی تاہم اس کو فائرنگ سے ہلاک کردیا گیا۔

فرانس اور بیلجیئم کے برعکس گزشتہ چند برسوں میں جرمنی شدت پسندوں کے ہاتھوں نشانہ نہیں بنا۔ تاہم سیکورٹی ذمہ داران کا کہنا ہے کہ انہوں نے بڑی تعداد میں سازشوں کو ناکام بنایا ہے۔

جرمنی نے 2015 میں تقریبا 10 لاکھ مہاجرین کا استقبال کیا جن میں ہزاروں تنہا نابالغ بھی شامل ہیں۔ مہاجرین کی ایک بڑی تعداد نے شام ، عراق اور افغانستان جیسے ملکوں میں جنگوں کے سبب راہ فرار اختیار کی۔