بیلجیئم : دو مشتبہ افراد حملے کی سازش کے الزام میں گرفتار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

بیلجیئم میں پولیس نے ایک حملے کی سازش کے الزام میں دو مشتبہ افراد کو گرفتار کر لیا ہے۔

بیلجیئم کے وفاقی پراسیکیوٹرز نے ہفتے کے روز ایک بیان میں بتایا ہے کہ ان دونوں مشتبہ افراد کو جمعے کو ایک چھاپا مار کارروائی کے دوران پکڑا گیا ہے۔ان میں ایک کی عمر 33 سال اور اس کا نام نور الدین ایچ ہے۔دوسرا اس کا بھائی ہے اور اس کا نام حمزہ ایچ ہے۔انھیں آج ایک عدالت میں پیش کیا جارہا ہے اور جج انھیں چوبیس گھنٹے سے زیادہ مدت کے لیے تحویل میں رکھنے کے بارے میں کوئی فیصلہ کریں گے۔

وفاقی دفتر استغاثہ (پراسیکیوشن) نے اپنے بیان میں ان دونوں مشتبہ افراد سے ابتدائی تفتیش کے حوالے سے بتایا ہے کہ وہ بیلجیئم میں کسی بھی جگہ ایک حملے کی منصوبہ بندی کررہے تھے۔بیلجیئن پولیس نے مونس کے علاقے میں سات اور لیگ کے علاقے میں ایک مکان میں تلاشی کی کارروائی کی تھی۔پولیس کو کوئی ہتھیار یا دھماکا خیز مواد نہیں ملا ہے۔

دفتر نے مزید وضاحت کی ہے کہ ان دونوں کا 22 مارچ کو برسلز کے ہوائی اڈے اور ایک میٹرو پر حملوں سے فی الوقت کوئی تعلق ثابت نہیں ہوا ہے۔ان دونوں مقامات پر خودکش بم دھماکوں میں 32 افراد ہلاک ہوگئے تھے۔

برسلز میں دہشت گردی کے ان واقعات کے بعد سے سکیورٹی ہائی الرٹ ہے اور وہ چار میں سے تین کی سطح تک الرٹ ہے۔اس سنگین درجے کا مطلب یہ ہے کہ ملک میں ممکنہ حملے کا خطرہ موجود ہے۔برسلز میں یورپی یونین کے اداروں اور معاہدہ شمالی اوقیانوس کی تنظیم نیٹو کے صدر دفاتر واقع ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں