.

یمن کا گھیراؤ نہیں، اسلحہ کی اسمگلنگ روکیں گے: عرب اتحاد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں آئینی حکومت کی بحالی اور باغیوں کے خلاف سرگرم عرب اتحاد نے واضح کیا ہے کہ فورسز کی تازہ نقل وحرکت کا مقصد یمن کا محاصرہ کرنا نہیں بلکہ باغیوں کو اسلحہ کی سپلائی روکنا ہے۔

العربیہ ٹی وی چینل کی ایک رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ عرب اتحاد کی جانب سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ عرب ممالک یمن میں جنگ سے متاثرہ شہریوں کو ریلیف فراہم کرنے، تجارتی سامان کی آمد و رفت کو یقینی بنانے اور تیل کی مصنوعات کی فراہمی کے لیے ہرممکن اقدامات کررہے ہیں۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ سعودی عرب کی قیادت میں قائم عرب اتحاد یمن کا گھیراؤ نہیں کررہا ہے بلکہ تازہ نقل وحرکت کا مقصد اقوام متحدہ کی قراردادوں پر عمل درآمد کرتے ہوئے اسلحہ اور دھماکہ خیز مواد کی اسمگلنگ روکنا ہے۔

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ یمن میں صحت کی صورت حال بہتر بنانے کے لیے اقدامات کیے جا رہے ہیں۔ حال ہی میں تعز کے اسپتالوں کو 40 ٹن ادویہ اور طبی سامان مہیا کیا گیا ہے۔

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ عرب اتحاد یمن میں تجارتی سامان اور تیل کی مصنوعات کی فراہم یقینی بنانے کے لیے اقوام متحدہ کے ساتھ مکمل تعاون کررہا ہے۔ اس ضمن میں تجارتی سامان کی آمد ورفت کے لیے چار ہزار پرمٹ جاری کیے گئے ہیں۔

باغیوں کے زیرکنٹرول رہنے والی الحدیدہ گذرگاہ سے تجارتی جہازوں کو گذرنے کے لیے 1462 پرمٹ جاری کیے گئے ہیں۔