.

خواتین کے زیر انتظام کامیاب اور منافع بخش کمپنیوں کا راز ؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایک جدید تحقیق سے یہ بات ظاہر ہوئی ہے کہ بڑی کمپنیوں کے بورڈ آف ڈائریکٹرز میں خواتین کی شرکت کمپنیوں کی کارکردگی پر مثبت اثر ڈالتی ہے اور ان کے منافع اور پیداوار میں بھی اضافہ کر دیتی ہے۔ علاوہ ازیں جس کمپنی کی انتظامیہ میں مرد اور خواتین شامل ہوتے ہیں وہ بسا اوقات شیئر ہولڈرز اور اسٹیک ہولڈرز کے مطالبات اور اسی طرح سماجی اور ماحولیاتی تقاضے پورے کرنے پر زیادہ قدرت رکھتی ہے۔

تحقیق سے یہ بات بھی سامنے آئی ہے جن کمپنیوں کی انتظامیہ میں خواتین شامل ہوتی ہیں وہ ملازمین کے درمیان مساوات اور انصاف کو یقینی بنانے میں غالباً زیادہ کامیاب ہوتی ہیں۔ اسی طرح وہ کام کے ماحول کے تحفظ اور مطلوبہ کارپوریٹ گورننس کے معیار کو بھی یقینی بناتی ہیں۔ آخرکار اس کا نتیجہ کمپنیوں کے مسابقتی فوائد اور سرمایہ کاروں کے لیے زیادہ پُرکشش ہونے کی صورت میں نکلتا ہے۔

یہ نتائج(The Conversation) میڈیا گروپ کی جانب سے نشر کی جانے والی تحقیق میں سامنے آئے ہیں۔ تحقیق میں جوہانسبرگ اسٹاک ایکسچینج میں رجسٹرڈ جنوبی افریقا میں موجود کمپنیوں کے بورڈ آف ڈائریکٹرز (2009 سے 2015 تک) میں "جنس" کے اختلاف کے درمیان تعلق پر غور کیا گیا۔

تحقیق کا اختتام اس مرکزی نتیجے پر ہوا کہ جن کمپنیوں کے بورڈ آف ڈائریکٹرز میں مرد اور خواتین دونوں شامل ہوتے ہیں وہ ان کمپنیوں کے مقابلے میں زیادہ بہتر اور مسابقت کی حامل ہوتی ہیں جن کی انتظامیہ میں صرف مردوں کا غلبہ ہوتا ہے۔

تحقیق میں کمپنی انتظامیہ میں خاتون کی موجودگی کے اثر کو پوری طرح جاننے کے لیے مختلف شعبوں کے بہتر اور مثبت نتائج کو شامل کیا گیا۔ ان میں کوالٹی کنٹرول ، ماحولیاتی اہداف ، کمپنی میں قوانین کی پاسداری اور خلاف ورزی کا حجم شامل ہیں۔

تحقیق میں جنوبی افریقہ میں جوہانسبرگ اسٹاک ایکسچینج کی انتظامیہ کے علاوہ ، اقتصادی خبروں کے لیے بہترین نیوز ایجنسی شمار کی جانے والی "بلوم برگ" ایجنسی اور دیگر ثانوی ذرائع سے معلومات حاصل کی گئیں۔

محققین کا کہنا ہے کہ کمپنیوں کی تحقیق کے لیے جنوبی افریقا کے چُناؤ کا سبب اُبھرتی منڈیوں پر تحقیق کی کمی ہے۔ علاوہ ازیں ابھرتی منڈیوں کی اقتصادی سرگرمیوں میں خواتین کی شرکت کم ترین سطح پر نظر آتی ہے۔