’یو این‘ امن مندوب کی یمنی فریقین سے مذاکرات روکنے پربات چیت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

یمن کے بحران کے حل کے لیے اقوام متحدہ کی طرف سے مقرر کردہ خصوصی ایلچی اسماعیل ولد الشیخ احمد نے کل جمعہ کو یمنی حکومت کے وفد سے ملاقات کی۔ اس ملاقات کے چند گھنٹے بعد یمن مذاکرات کو کچھ وقت کے لیے ملتوی کرنے کا باضابطہ اعلان کیا گیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق یمن کے سرکاری وفدسے ملاقات میں ملک میں جاری بحران کے حل، تمام متحارب فریقین کو ایک بار پھر مذاکرات کی میز پرلانے اور مشاورتی عمل بحال کرنے کے طریقہ پر بات چیت کی گئی۔

رات گئے اسماعیل ولد الشیخ احمد نے یمن کے بحران کے حل میں سرگرم 18 ملکوں کےسفیروں سے بھی ملاقات کی۔ اس ملاقات میں نے یمن کی موجودہ صورت حال ، امن بات چیت اور بحران کے حل کے سلسلے ہونے والی پیش رفت سے آگاہ کیا۔

آج ہفتے کو ولد الشیخ احمد حکومت اور باغیوں کے نمائندوں سے ایک بار پھر ملاقات کریں گے جس کے بعد کچھ وقت کے لیے مذاکراتی عمل ملتوی کردیا جائے گا۔

قبل ازیں یو این مندوب نے کہا تھا کہ ہفتے کو یمن مذاکرات ملتوی کیے جائیں گے تاہم جلد ہی بات چیت کا عمل بحال ہوجائے گا۔

ادھر اقوام متحدہ کے مندوب کےدفترکے ذرائع کا کہنا ہے کہ امن بات چیت ایک نئے مرحلے میں داخل ہو رہی ہے۔

موریتانیہ سے تعلق رکھنے والے امن ایلچی اسماعیل ولد الشیخ احمد نے کویتی ٹی وی سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ’ہفتے کے روز ہم اختتامی میٹنگ کریں گے۔ اس اجلاس میں اب تک طے پائے نکات کے بارے میں باقاعدہ اعلان کیا جائے گا‘۔ انہوں نے مزید کہا کہ 21 اپریل سے جاری مذاکرات معمولی تعطل کے بعد جلد دوبارہ شروع ہوں گے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں