یمن: عسکری کونسل کا تعز میں جبلِ صبر پر کنٹرول کا اعلان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

یمن میں عسکری کونسل نے تعز شہر کے جنوب میں جبل صبر پر کنٹرول حاصل کرنے کا اعلان کیا ہے۔ عوامی مزاحمت کاروں اور قومی فوج نے شہر کے جنوب میں المسراخ ضلعے کے علاقے الاقروض میں جبل الرضعہ اور الہوبین کی تطہیر کا عمل مکمل کرلیا۔ اس دوران کونسل نے ملیشیاؤں کے مقابلے کے لیے نفیر عام کا اعلان کردیا ہے۔

حوثی اور معزول صدر صالح کی ملیشیاؤں کی جانب سے جبل صبر کے دیہاتوں پر توپ خانوں اور ٹینکوں کے ذریعے شدید اور اندھا دھند گولہ باری کی گئی۔ اس کے علاوہ تعز کے بیچ القاہرہ قلعے اور شہر کے مشرقی حصے میں رہائشی علاقوں کو بھی گولہ باری کا نشانہ بنایا گیا۔

عوامی مزاحمت کاروں اور قومی فوج نے تعز میں 35 آرمر بریگیڈ کے ہیڈ کوارٹر پر حملے کو پسپا کردیا۔ اس دوران مدارات اور وادی عنش کے علاقے میں بھی عوامی مزاحمت کاروں اور قومی فوج کے ٹھکانوں پر شدید بمباری کی گئی۔

تعز شہر کے مشرقی حصے میں عقبہ اور الجحملیہ کے علاقوں میں باغی ملیشیاؤں کے درجنوں ارکان ہلاک اور زخمی ہوگئے جہاں قومی فوج اور عوامی مزاحمت کاروں نے باغیوں کے حملے کو ناکام بنا دیا۔

ادھر قومی فوج کئی گھنٹوں کی لڑائی کے بعد پیش قدمی کے نتیجے میں قریش کوچے کے قریب پہنچ گئی جو حوثی ملیشیاؤں کا ایک اہم گڑھ ہے۔

تعز میں عسکری کونسل کے میڈیا سینٹر نے تصدیق کی ہے کہ سرکاری فورسز شہر کے جنوب میں واقع ضلع الصلو کے گاؤں الصیار کا کنٹرول واپس لینے میں کامیاب ہوگئی ہیں۔

دوسری جانب عرب اتحاد کے طیاروں نے عوامی مزاحمت کاروں کو فضائی معاونت پیش کرتے ہوئے شہر کے مشرق میں واقع الجند کے علاقے میں بریگیڈ 22 ، تعز ایئرپورٹ اور الحوبان میں الصالح شہر کے احاطے میں ملیشیاؤں کے ٹھکانوں کو بمباری کا نشانہ بنایا اور جھڑپوں کے مقامات پر ملیشیاؤں کی سپلائی لائن کاٹ دی۔

عوامی مزاحمت کاروں کی معاونت کے لیے تعز صوبے میں عوامی مزاحمت کاروں کی کوآرڈی نیشن کونسل نے مطالبہ کیا ہے کہ جس کسی میں بھی ہتھیار اٹھانے کی صلاحیت ہے وہ لڑائی کے محاذوں پر شامل ہوجائے اور شہر کا محاصرہ کرنے والی باغی ملیشیاؤں کے خلاف مقابلے میں عوامی مزاحمت کاروں کی سپورٹ کرے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں