اردن نے پہلی مرتبہ اولمپکس میں طلائی تمغا جیت لیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

ریو ڈی جنیرو میں جاری اولمپکس مقابلوں میں اردن کے احمد ابو غوش نے تاریخ رقم کردی ہے اور انھوں نے اپنے ملک کے لیے پہلی مرتبہ کسی بھی کھیل میں طلائی تمغا جیت لیا ہے۔

بیس سالہ احمد نے مردوں کے تائیکوانڈو کے 68 کلوگرام سے کم کیٹگری کے مقابلے میں روس کے الیکسے ڈینسینکو کو فائنل میں 10-6 سے شکست دی ہے۔اسی مقابلے میں جنوبی کوریا کے لی ڈائی ہون اور سپین کے جوئیل گونازیلز نے کانسی کا تمغا جیتا ہے۔

احمد ابو غوش کی اس شاندار کامیابی پر اردن میں بے پایاں خوشی کا اظہار کیا جارہا ہے۔شاہی خاندان سمیت ان کے ہم وطن بڑی دلچسپی سے ٹیلی ویژن پر ان کا روسی ایتھلیٹ سے مقابلہ دیکھتے رہے تھے۔جونہی انھوں نے اپنی شاندار فتح کے بعد طلائی تمغا پہنا تو انھیں اردن کے شاہ عبداللہ دوم کے بھائی اور ملک کی اولمپک کمیٹی کے صدر شہزادہ فیصل الحسین نے ٹیلی فون کیا اور انھیں مبارک باد دی۔

احمد نے بتایا ہے:''شہزادہ فیصل نے انھیں مطلع کیا کہ اردن کے عوام اس جیت پر بہت خوش ہیں اور خوشی سے ان کی آنکھوں سے آنسو رواں ہیں''۔ان کا کہنا تھا کہ ''وہ اردن کے لیے پہلا طلائی تمغا جیتنے پر بہت خوش ہیں اور وہ اب ریو میں اپنے ہم وطنوں کے ساتھ پھر کر اور گاکر فتح کا جشن منائیں گے''۔

مقبول خبریں اہم خبریں