.

صنعا کا قریب قریب فوجی سقوط ہوچکا : یمنی حکومت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے دارالحکومت صنعا کا قریب قریب فوجی سقوط ہوچکا ہے۔یہ بات یمن کے وزیرمملکت برائے پارلیمانی امور اور شوریٰ کونسل عثمان مجلی نے جمعہ کے روز العربیہ نیوز چینل سے گفتگو کرتے ہوئے کہی ہے۔

عثمان مجلی کا کہنا ہے کہ قبائلی سرداروں اور مقامی عمائدین نے حوثی ملیشیا اور سابق صدرعلی عبداللہ صالح کی وفادار فورسز اور سعودی عرب کی قیادت میں اتحاد کی فورسز کے درمیان لڑائی میں صدر منصور ہادی کی قانونی حکومت کی طرف داری کا آغاز کردیا ہے۔

صنعا پر حوثی شیعہ باغیوں نے ستمبر 2014ء سے صدر عبد ربہ منصور ہادی کے خلاف مسلح بغاوت کے بعد سے قبضہ کررکھا ہے۔دارالحکومت پر قبضے کے بعد بہت سے قبائلی عمائدین بھی حوثی باغیوں کے ساتھ مل گئے تھے اور بہت سوں نے اس لڑائی میں غیرجانبدار رہنے کا فیصلہ کیا تھا۔

اتحادی فورسز نے صنعا اور حوثی باغیوں کے زیر قبضہ دوسرے علاقوں میں فضائی مہم تیز کررکھی ہے اور حالیہ دنوں میں اس کے لڑاکا طیاروں کی بمباری میں حوثیوں اور علی صالح کی وفادار فورسز کو بھاری جانی نقصان اٹھانا پڑا ہے جبکہ یمن کے مختلف علاقوں میں صدر منصور ہادی کی وفادار فورسز اور حوثی باغیوں کے درمیان زمینی لڑائی میں بھی شدت آ چکی ہے جس کے پیش نظر یہ کہا جارہا ہے کہ یمنی حکومت کی وفادار فورسز بہت جلد صنعا میں بھی دوبارہ اپنی عمل داری قائم کرنے میں کامیاب ہو جائیں گی۔