.

علی صالح یمن میں ایرانی طرز حکمرانی کے لیے کوشاں!

گارڈین کونسل اور مجلس خبرگان کی تشکیل کی تجویز

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے ایک ذمہ دار اور باثوق ذریعے نے انکشاف کیا ہے کہ مںحرف سابق صدر علی عبداللہ صالح ملک میں ایرانی طرز کا نظام حکومت قائم کرنا چاہتے ہیں۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ علی صالح نے اپنے حلیف حوثی باغیوں کو حال ہی میں ایک پرکشش تجویز پیش کی جس میں کہا گیا کہ ایرانی ماڈل کے مطابق یمن میں بھی خبر گان کونسل اور گارڈین کونسل کے ادارے تشکیل دیے جائیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے ذریعے کے مطابق علی صالح موجودہ انقلابی حکومت میں با اختیار عہدہ حاصل کرنے کے خواہاں ہیں۔ انہوں نے گارڈین کونسل کی تشکیل کی تجویز اس لیے دی ہے تاکہ وہ اس اہم ادارے کے سربراہ مقرر کیے جاسکیں۔ ایسے ہی جیسے کہ ایران میں سابق صدر علی اکبر ہاشمی رفسنجانی کو گارڈین کونسل کا چیئرمین مقرر کیا گیا ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ حال ہی میں جب حوثی باغیوں اور علی صالح نے مل کر "سپریم انقلابی سیاسی کونسل" کی تشکیل کا اعلان کیا تو علی صالح نے سیاسی کونسل کی سربراہی حوثیوں کے لیے چھوڑ دی تھی۔ حکومت کے کلیدی عہدے بھی حوثی باغیوں کو دیے گئے ہیں۔ اس کے بدلے میں علی صالح نے انہیں تجویز دی ہے کہ وہ ایران کی طرز پر گارڈین کونسل کا ادارہ تشکیل دیں اور اس کی قیادت ان [علی صالح] کے حوالے کردیں۔

یمن کے سیاسی تجزیہ نگار احمد سعید کہتے ہیں کہ علی صالح اس وقت صرف با اثر عہدے کے حصول کے لیے کوشاں ہیں چاہے انہیں یہ عہدہ ایک غیرتسلیم شدہ انقلابی اتھارٹی ہی کی طرف سے کیوں نہ دیا جائے۔