فرانس کی سکیورٹی کے لیے سنگین خطرے کا موجب دو مراکشی بے دخل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

فرانسیسی حکومت نے دو مراکشی شہریوں کو ملک کے لیے سنگین سکیورٹی خطرہ قرار دے کر بے دخل کردیا ہے۔

فرانسیسی وزارت داخلہ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ''یہ دونوں افراد پہلے بنیاد پرست تھے اور اس کے بعد انتہا پسند جنگجو بن گئے تھے۔ان کی فرانسیسی سرزمین پر بدستور موجودگی ایک سنگین سکیورٹی خطرے کا موجب تھی۔اس لیے وزارت داخلہ نے انھیں فوری طور پر بے دخل کرنے کا فیصلہ کیا ہے''۔

اس نے ان دونوں افراد کے حوالے سے مزید کوئی تفصیل نہیں بتائی ہے لیکن یہ کہا ہے کہ اگست میں اسی طرح کے حالات میں چھے دھماکے ہوئے تھے اور اس سال کے آغاز کے بعد کل پندرہ دھماکے ہوچکے ہیں۔

فرانس میں گذشتہ سال جنوری کے بعد سے سکیورٹی ہائی الرٹ ہے۔اس عرصے کے دوران انتہا پسند جنگجوؤں کے حملوں میں 236 افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔فرانسیسی وزیر داخلہ برنارڈ کازینوف نے اگلے روز ایک نیوز کانفرنس میں بتایا تھا کہ اگست کے دوران میں دہشت گردی کے نیٹ ورکس کے ساتھ تعلق کے الزام میں سات مشتبہ افراد کو گرفتار کیا گیا ہے۔ان میں سے تین دہشت گردی کے حملوں کی سازش کررہے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں