.

ترکی: لڑاکا جیٹ کے حملوں میں تین کرد باغی ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ترکی کے لڑاکا جیٹ نے ملک کے جنوب مشرقی علاقے میں عراق کی سرحد کے نزدیک کالعدم کردستان ورکرز پارٹی ( پی کے کے) کے ٹھکانوں پر بمباری کی ہے جس کے نتیجے میں تین کرد باغی ہلاک ہوگئے ہیں۔

ترکی کے لڑاکا جیٹ نے سرحدی صوبے حکاری کے پہاڑی حصے میں واقع قصبے چکرچا کے نزدیک یہ بمباری پی کے کے کے حالیہ دنوں میں سکیورٹی فورسز کے خلاف پے درپے حملوں کے بعد کی ہے۔

ترک سکیورٹی فورسز اور کرد باغیوں کے درمیان ملک کے جنوب مشرقی علاقوں میں جولائی 2015ء سے لڑائی جاری ہے اور یہ لڑائی حکومت اور کالعدم کردستان ورکرز پارٹی کے درمیان ڈھائی سالہ جنگ بندی کے خاتمے کے بعد چھڑی تھی۔اس دوران ترک فوج نے قریباً چھے ہزار کرد جنگجوؤں کو ہلاک کردیا ہے جبکہ ترکی کے کرد اکثریتی علاقوں میں کرد باغیوں کے حملوں اور جھڑپوں میں چھے سو سے زیادہ سکیورٹی اہلکار ہلاک ہوچکے ہیں۔

گذشتہ ماہ پی کے کے کی ترکی کی مرکزی حکومت کے خلاف مسلح بغاوت کو بتیس پورے ہوگئے ہیں۔کرد قوم پرست مارکسسٹوں نے اپنے لیڈر (اب جیل میں قید) عبداللہ عجلان کی قیادت میں جنوب مشرقی علاقے کی خود مختاری کے نام پر 1984ء میں مسلح بغاوت کا آغاز کیا تھا۔اس خونریزی میں پینتالیس ہزار سے زیادہ افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔