نیویارک : مشتبہ ملزم کا امام کے قتل میں قصور وار نہ ہونے کا دعویٰ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

نیویارک کی ایک عدالت میں گذشتہ ماہ ایک مسلم پیش امام اور ان کے نائب کو قتل کرنے والے مشتبہ ملزم نے قصور وار نہ ہونے کا دعویٰ کیا ہے۔۔پراسیکیوٹرز نے اس پر قتل اور ہتھیار رکھنے کے الزامات میں مقدمہ قائم کیا ہے۔

اس چھتیس سالہ ملزم آسکر مورل نے 13 اگست کو بنگلہ دیش سے تعلق رکھنے والے پیش امام مولانا عکونجی اور ان کے نائب چونسٹھ سالہ ثرالدین کو کوینز کے علاقے اوزون پارک میں مسجد سے نکلنے کے بعد فائرنگ کرکے قتل کردیا تھا۔

حکام ابھی تک قتل کی اس واردات کے محرک کا سراغ لگانے میں کامیاب نہیں ہوسکے ہیں۔مورل کے وکیل مائیکل شاوید نے فوری طور پر اس حوالے سے کوئی تبصرہ کرنے سے انکار کیا ہے۔ملزم اس وقت بلا ضمانت زیر حراست ہے اور اس کو 18 اگست کو دوبارہ کوینز اسٹیٹ عدالت میں پیش کیا جائے گا۔

پچپن سالہ مقتول عکونجی سات بچوں کے باپ تھے۔وہ کئی سال قبل بنگلہ دیش سے ترک وطن کرکے امریکا میں آ بسے تھے۔نیویارک کے جس علاقے میں وہ پیش امام تھے،وہاں زیادہ تر بنگلہ دیشی تارکین وطن ہی رہ رہے ہیں۔اس کمیونٹی کے ارکان کا کہنا ہے کہ مقتول دھیمے مزاج کے حامل اور صبروتحمل والے مذہبی آدمی تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں