امریکی راکٹ پھٹنے سے اسرائیلی کمپنی کو شدید دھچکا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی کمپنی اسپیس ایکس کا فیلکن 9 ساخت کا ایک راکٹ ریاست فلوریڈا میں کیپ کینورل میں تجربے کے دوران دھماکے سے پھٹ گیا۔ راکٹ کو ہفتے کی صبح ایک مصنوعی سیارے کے ساتھ زمین کے گرد مدار میں بھیجا جانا تھا۔

اسپیس ایکس کمپنی کا کہنا ہے کہ حادثے کے نتیجے میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا تاہم راکٹ اور اسرائیلی سیٹلائٹ کمیونی کیشن کمپنی کا مصنوعی سیارہ تباہ ہو گئے۔ فیس بک کمپنی کی جانب سے اس مصنوعی سیارے کو براعظم افریقہ میں انٹرنیٹ خدمات کی توسیع کے سلسلے میں استعمال کیا جانا تھا۔

دھماکے سے متعلق وڈیو کلپس میں راکٹ کے اوپر والے حصے میں لگنے والی آگ کو دیکھا جا سکتا ہے۔ بعد ازاں فضا میں دھوئیں کے گہرے بادل چھا گئے۔

اس سلسلے میں اسرائیلی سیٹلائٹ کمیونی کیشن کمپنی نے ایک بیان میں کہا ہے کہ "ہمیں اسپیس ایک کمپنی پر اعتماد ہے۔ وہ حادثے کی وجوہات کا انکشاف کرے گی"۔

اسپس ایکس کمپنی ہفتے کو صبح سویرے فیلکن 9 ماڈل کا اپنا 29 واں راکٹ چھوڑنا تھا جس کی لاگت تقریبا 6.2 کروڑ ڈالر ہے۔ راکٹ کے ساتھ سیٹلائٹ کمیونی کیشن کی اسرائیلی کمپنی کا مصنوعی سیارہ عاموس-6 بھیجا جانا تھا۔

اسرائیلی کمپنی کا کہنا ہے کہ مصنوعی سیارے کے نقصان کا کمپنی پر "بہت بڑا اثر" ہوگا۔

ادھر اسرائیلی خلائی ایجنسی کے سربراہ اسحاق بن اسرائیل کا کہنا ہے کہ اس نقصان نے ملک میں کمیونی کیشن سیٹلائٹ کی صنعت کو شدید ضرب لگائی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں