یمنی باغیوں کا نجی ٹی وی کے ہیڈ کواٹر پردھاوا، عملہ یرغمال

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

یمن سے العربیہ نیوز کے نامہ نگار نے اطلاع دی ہے کہ حوثی اور مںحرف صدر علی صالح کے حامی باغیوں نے گذشتہ روز صنعاء سے نشریات پیش کرنے والے ’’السعیدہ‘‘ نجی ٹی وی چینل کے ہیڈ کواٹر پر دھاوا بولا اور ٹی وی کے جنرل مینیجر مختار القدسی سمیت تمام عملہ یرغمال بنانے کے بعد ٹی وی ہیڈ کواٹر سے نشریاتی آلات اور دیگر سامان بھی لوٹ لیا ہے۔

العربیہ کے مطابق حوثی اور علی صالح کے حامی باغیوں نے ٹی وی چینل کے دفتر پر دھاوا بولنے کے بعد اس میں توڑپھوڑ کی اور عملے کو زدو کوب کیا۔ بعد ازاں یرغمال بنائے گئے تمام افراد کو کسی نامعلوم مقام پر منتقل کردیا گیاہے۔ السعیدہ ٹی وی چینل پر باغیوں کی تازہ یلغار کی وجہ معلوم نہیں ہوسکی ہے۔

خیال رہے کہ یمن کے حوثی باغی اور سابق مںحرف صدر علی عبداللہ صالح کے وفادار صحافتی حقوق کی سنگین پامالیوں کے مرتکب ہو رہے ہیں۔ ایک رپورٹ کے مطابق یمن میں بغاوت کے بعد باغیوں کے ہاتھوں صحافتی حقوق کی 400 خلاف ورزیاں سامنے آچکی ہیں۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق یمنی باغیوں کی طرف سے صحافیوں اور اخباری نمائندوں کو ہراساں کرنے کے مختلف حربے آزمائے جاتے ہیں۔ ان میں صحافیوں کے قتل، اغواء، تشدد، جبری نظر بندی، ابلاغی اداروں پر حملے اور نشریاتی الات کی ضبطی جیسے مجرمانہ ہتھکنڈے شامل ہیں۔ حالیہ چند ماہ کے دوران باغیوں کے ہاتھوں یمن میں صحافی قوانین کی 100 خلاف ورزیاں ریکارڈ کی گئی ہیں۔

یمن کی سرکاری خبر رساں ایجنسی "سبا" کے مطابق باغیوں کے حملوں میں چھ صحافی ہلاک، 11 کو ہولناک تشدد کا نشانہ بنایا گیا۔ 24 اخباری نمائندے اغواء کیے گئے اور 13 کو سنگین نتائج کی دھمکیاں دے کر پیشہ وارانہ فرائض کی انجام دے سے روکا گیا۔ باغیوں کی طرف سے 12 ابلاغی اداروں پرحملے اور توڑپھوڑ کی گئی، 13 نیوز ویب سائیٹس بند کی گئیں اوراقدام قتل کے 10 واقعات اور سات صحافیوں کی تنخواہیں روکی گئیں۔ ابلاغی اداروں پر یلغار کے دوران املاک کی لوٹ مار اس کے علاوہ ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں