.

پیرس میں اکتوبر کے وسط میں پہلا مہاجر کیمپ کھلے گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فرانس کے دارالحکومت پیرس میں مہاجرین کے لیے پہلا کیمپ اکتوبر کے وسط میں کھولا جائے گا۔پیرس کی میئر این ہیڈلگو نے منگل کے روز ایک نیوز کانفرنس میں بتایا ہے کہ یہ مہاجر مرکز صرف مردوں کے لیے مخصوص ہوگا اور اس میں چار سو افراد کے قیام کی گنجائش ہوگی۔

یہ ہنگامی مرکز پیرس کے شمال میں واقع ریلوے کی ایک پرانی جگہ پر قائم کیا جائے گا اور یہ شہر کے ارد گرد قائم کیے گئے عارضی کیمپوں کی جگہ لے گا۔مئیر نے بتایا ہے کہ اس کیمپ میں سیاسی پناہ کے خواہاں افراد کو پانچ سے دس روز تک قیام کی اجازت ہوگی اور انھیں وہاں طبی امداد اور نفسیاتی مشاورتی مہیا کی جائے گی۔

این ہیڈلگو نے مزید بتایا ہے کہ خواتین اور بچوں کے لیے الگ سے ایک مرکز اس سال کے آخر میں پیرس کے جنوب مشرق میں واقع علاقے آئیوری سورسین میں قائم کیا جائے گا۔

سوشلسٹ پس منظر کی حامل این ہیڈلگو کا کہنا ہے کہ پیرس مرکز پر 65 لاکھ یورو لاگت آئے گی اور اس کا مقصد سیاسی پناہ کے خواہاں افراد کو سڑکوں اور بازاروں میں ادھر ادھر گھومنے پھرنے کے بجائے ایک عارضی جائے قیام مہیا کرنا ہے۔

میئر کے اس اعلان سے چندے قبل ہی منگل کی صبح پولیس نے پیرس کے شمال میں ایک اور عارضی کیمپ کو اکھاڑ دیا ہے۔اس کیمپ میں فرانس میں سیاسی پناہ کے خواہاں سیکڑوں غیرملکی مقیم تھے۔