لیبیا میں پکڑے گئے جرمنی سے تعلق رکھنے والے دو امدادی کارکنان رہا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

جرمنی سے تعلق رکھنے والے دو تارک وطن امدادی کارکنان کو رہا کردیا گیا ہے۔انھیں لیبیا کے ساحلی محافظوں نے سوموار کی شب بحر متوسطہ میں سفر کے دوران پکڑ لیا تھا۔

بحر متوسطہ میں سرگرم ایک انسانی امدادی گروپ ''سی آئی'' کے ترجمان ہانس پیٹر بوشیور کا کہنا ہے کہ یہ دونوں جرمن تارک وطن شمالی افریقا سے یورپ کی جانب سفر کررہے تھے۔

لیبیا کی بحریہ کا کہنا ہے کہ اس گروپ کا چھوٹا بحری جہاز ان کی آبی حدود میں داخل ہوگیا تھا۔جرمنی امدادی کارکنان نے بھاگنے کی کوشش کی تھی لیکن جب انتباہی گولیاں چلائی گئیں تو وہ رُک گئے۔

بعد میں ان دونوں جرمنوں نے اعتراف کیا ہے کہ وہ جب لیبیا کے پانیوں میں داخل ہوئے تو اس وقت سوئے ہوئے تھے اور انھیں بیدار ہونے پر پتا چلا تھا کہ وہ بین الاقوامی پانیوں میں نہیں رہے ہیں۔

ترجمان کا کہنا ہے کہ ''ہمیں ان دونوں کارکنان کی گرفتاری کے وقت کی جگہ کا کوئی تحریری ثبوت نہیں دیا گیا ہے اور ان کا جہاز لیبیا لے جایا گیا تھا۔ اب ''سی آئی'' ان کے جہاز کی بازیابی کے لیے کوشاں ہے اور لیبی حکام سے گفت وشنید کررہی ہے۔

مسٹر بوشیور کا کہنا ہے کہ ہم لیبیا میں جرمن سفارت خانے کی مدد سے جہاز کی بازیابی کے لیے کوشاں ہیں۔ اگر یہ کوشش ناکام رہتی ہے تو پھر ہم قانونی چارہ جوئی کریں گے۔اس جہاز کی مالیت ایک لاکھ دس ہزار یورو ( ایک لاکھ بیس ہزار ڈالرز) ہے اور اس کی بازیابی مستقبل میں ہماری امدادی سرگرمیوں کے لیے بڑی اہمیت کی حامل ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں