.

یمنی کابینہ میں غیرمعمولی تبدیلی، مرکزی بنک عدن منتقل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے صدر عبد ربہ منصور ھادی نے اپنی کابینہ میں غیرمعمولی ردو بدل کیا ہے۔ ساتھ ہی یمنی حکومت نے مرکزی بنک کا صدر دفتر صنعاء سے عدن منتقل کردیا ہے۔

العربیہ کے مطابق یمنی صدر عبد ربہ منصور ھادی نے وزیراعظم احمد عبید بن دغر کی کابینہ میں تبدیلی کی ہے اور وزارت اطلاعات اور مالیات کے قلم دان تبدیل کردیے گئے ہیں۔ مرکزی بنک کے گورنر کو ہٹا کر نیا گورنرمقرر کرتے ہوئے بنک کا ہیڈ کوارٹر صنعاء سے عدن منتقل کردیا ہے۔

کابینہ میں تبدیلی کرتے ہوئے معمر مطہر الاریانی کو وزیر اطلاعات و نشریات، محمد عبدالمجید قباطی کو وزیرسیاحت، احمد عبید الفضلی کو وزیرمالیات، احمد زبین عطیہ کو وزیراوقاف ومذہبی امور، حسین عبدالرحمان باسلامہ کو اعلیٰ تعلیم، عبداللہ سالم الملس کو وزیر تعلیم اسکولز اور مروان احمد دماج کو وزیر ثقافت کے قلم دان سونپے گئے ہیں۔

اسی طرح کابینہ میں شامل ہونے والے نئے چہروں میں عبدالغنی حفظ اللہ جمیل اور عبدالرب صالح السلامی بھی شامل ہیں جنہیں وزیرمملکت کے قلم دان سونپے گئے ہیں۔

صدر عبد ربہ منصور ھادی نے مرکزی بنک کے سابقہ گورنر کو ہٹا کر منصر صالح محمد القعیطی کو مرکزی بنک کا نیاگورنر اور عباس احمد عبداللہ پاشا کو ڈپٹی گورنر کے عہدے پر تعینات کیا گیا ہے۔ مرکزی بنک کی انتظامیہ میں تبدیلی کے ساتھ ساتھ بنک کا صدر دفتر صنعاء سے عدن منتقل کرنے کا حکم دیا گیا ہے۔

بنک کی صنعاء سے عدن منتقلی یمنی باغیوں کے لیے بہت بڑا دھچکا ثابت ہوسکتی ہے۔