درانداز حوثی باغیوں کے ساتھ سعودی فوج کا تصادم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

سعودی عرب اور یمن کی سرحد کے قریب دراندازی کرنے والے حوثی باغیوں کے ساتھ سعودی فورسز کی شدید جھڑپوں کی اطلاعات ہیں جس کے بعد دراندازی کرنے والے باغیوں کو الخوبہ کی جانب کھیتوں میں دھکیل دیا گیا ہے۔

تاہم الطوال کے علاقے میں صورتحال پرسکون رہی اور وہاں کسی قسم کے تصادم یا جھڑپوں کی اطلاع نہیں ملی۔ تاہم یمنی علاقے سے الطوال پر متعدد راکٹ فائر کئے گئے جو خالی میدان میں گرنے سے کسی قسم کا جانی نقصان نہیں ہوا۔

ادھر نجران ریجن کے الربوعہ اور علب کے علاقوں میں سعودی فورسز کی حوثی ملیشیا اور معزول صدر علی عبداللہ صالح کے انقلابیوں کے ساتھ جھڑپوں کی اطلاع ہے۔ اس تصادم میں باغیوں کو بھاری جانی اور مالی نقصان اٹھانا پڑا جبکہ گزشتہ روز ہونے والی ان جھڑپوں میں متعدد شہری یمنی علاقے سے داغے جانے والے راکٹوں کی زد میں آ کر زخمی ہوئے جنہیں علاج کے لئے ہسپتال منتقل کر دیا گیا ہے۔

درایں اثنا اتحادی لڑاکا طیاروں نے مغربی یمن کے الحدیدہ شہر میں واقع صدارتی محل کے اندر حوثیوں کے ایک اجلاس کو نشانہ بنایا جس میں باغی ملیشیا کے متعدد جنگجو اور اہم قائدین ہلاک وزخمی ہوئے۔ نیز اتحادی طیاروں نے الحدیدہ کے سیکیورٹی ہیڈکوارٹر کو بھی بمباری کا نشانہ بنایا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں