.

کینیڈا میں ایک سال کے دوران ریکارڈ تعداد میں تارکینِ وطن کی آمد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

کینیڈا نے یکم جولائی کو ختم ہونے والے ایک سال کے دوران ریکارڈ تعداد میں تارکین وطن کو اپنے ہاں پناہ دی ہے۔

کینیڈا کے ادارہ شماریات نے ایک بیان میں بتایا ہے کہ ''ملک میں 1910ء کے بعد سے ایک سال کے عرصے کے دوران پہلے کبھی اتنی زیادہ تعداد میں تارکین وطن نہیں آئے تھے''۔

گذشتہ سال نومبر کے بعد سے اکتیس ہزار شامی مہاجرین بھی کینیڈا پہنچے ہیں۔ان سمیت تین لاکھ بیس ہزار نو بتیس غیرملکی تارکین وطن کی جون 2015ء سے یکم جولائی تک اس ملک میں آمد ہوئی ہے۔اس سے قبل 2009ء اور 2010ء میں اقتصادی بحران سے متاثرہ غیرملکی تارکین وطن بڑی تعداد میں کینیڈا منتقل ہوئے تھے۔

اس عرصے میں کینیڈا پر بھی عالمی مالیاتی بحران کے منفی اثرات مرتب ہوئے تھے اور بدترین معاشی حالات کے باوجود بھی اس نے دو لاکھ ستر ہزار سے زیادہ غیرملکیوں کو خوش آمدید کہا تھا۔نئے تارکین وطن کی آمد کے بعد کینیڈا کی آبادی میں بھی 1.2 فی صد اضافہ ہوگیا ہے اور وہ تین کروڑ ساٹھ لاکھ نفوس سے تجاوز کر گئی ہے۔