روس نے شام میں اپنی فضائی طاقت میں اضافہ کردیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

روس کے ایک موقر اخبار نے دعویٰ کیا ہے کہ ماسکو نے شام میں قائم اپنے ایک فوجی اڈے پر فوج اور اسلحے کی تعداد میں اضافہ کردیا ہے۔ نیز جلد ہی روس جنگی ہیلی کاپٹر شام پہنچا رہا ہے تاکہ شامی باغیوں کے خلاف جاری لڑائی کو مزید تیز کیا جاسکے۔

روس کی جانب سے شام میں فضائی فورس میں اضافے کی کوششیں ایک ایسے وقت میں شروع کی ہیں جب امریکا اور دوسرے ملک شام میں جنگ بندی کی کوششیں کررہے ہیں۔ روس کی طرف سے فضائی فورس میں اضافے کے اقدامات سے جنگ بندی کی مساعی مزید خطرات سے دوچار ہوسکتی ہیں۔

روسی اخبار ’ازفسٹیا‘ نے جمعہ کے روز ایک سینیر روسی فوجی عہدیدار کے حوالے سے بتایا کہ روس کے جنگی طیارے ’سوخوی 24‘ اور ’سوخوی 34‘ شام کے اللاذقیہ شہر میں قائم حمیمیم فوجی اڈے پر پہنچا دیئے گئے ہیں۔ فوجی عہدیدار کا کہنا تھا کہ ضرورت پڑنے پر دو یا تین دن کے اندر اندر مزید فضائی فورس اور اسلحہ منگوایا جا سکتا ہے۔

اخباری رپورٹ کے مطابق ’سوخوی 25‘ جیٹ طیارے کو بھی شام بھیجنے کی تیاری کی جا رہی ہے۔ ان طیاروں کے عملے کا انتخاب کرلیا گیا ہے۔ فوجی قیادت کی طرف سے حکم ملتے ہی یہ جنگی طیارہ بھی شام روانہ کیا جاسکتا ہے۔

خیال رہے کہ رواں سال مارچ میں روسی صدر ولادی میر پوتن نے شام میں روسی فوج کے زیراستعمال ’حمیمیم‘ فوجی اڈے سے جنگی طیارے اور فوج واپس بھجوانے کا اعلان کیا تھا۔ ان کے اس اعلان کے بعد شام میں جنگ بندی کے آثار سامنے آئے تھے مگر عملا روسی فوج نے شام میں بشارالاسد کے ساتھ مل کر بمباری کا سلسلہ بدستور جاری رکھا ہوا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں