فرانس : 15 سالہ طالب علم پر دہشت گردی کی سازش پر فرد جُرم عاید

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

فرانس میں ایک پندرہ سالہ اسکول طالب علم پر ملک میں دہشت گردی کے ایک حملے کی سازش کے الزام میں فرد جُرم عاید کردی گئی ہے۔

ایک عدالتی ذریعے نے بتایا ہے کہ اس طالب علم پر ایک دہشت گرد گروپ سے مجرمانہ تعلق پر فرد الزام عاید کی گئی تھی۔وہ شام یا عراق میں موجود داعش کے ایک بدنام فرانسیسی جنگجو راشد قاسم کی ہدایت پر دہشت گردی کا حملہ کرنا چاہتا تھا۔

وہ ٹیلی گرام کی پیغام رسانی کی ایپلیکشن کے ذریعے راشد قاسم سے رابطے میں تھا۔فرانس کی انٹیلی جنس سروسز پہلے اس لڑکے کی سرگرمیوں سے آگاہ نہیں تھیں۔اس کو بدھ کو ڈومونٹ میں واقع اس کے والدین کے گھر سے پکڑا گیا تھا۔وہ اڑتالیس گھنٹے تک پوچھ تاچھ کے لیے پولیس کی حراست میں رہا تھا۔اس کو جمعہ کی صبح عدالت میں پیش کیا گیا تھا۔

ایک اور عدالتی ذریعے کا کہنا ہے کہ ''اس بات کا شُبہ تھا کہ وہ دہشت گردی کی کارروائی انجام دینے والا تھا لیکن اس نے دوران حراست بتایا تھا کہ اس نے اپنا یہ ارادہ ترک کردیا تھا''۔

وہ ٹیلی گرام مسینجر پر بہت فعال تھا اور وہ جنگجوؤں کے پروپیگنڈے کو نشر کرنے والے دو اسٹیشنوں کو خاص طور پر پسند کرتا تھا۔وہ ایک اور لڑکے سے بھی رابطے میں تھا۔اس لڑکے کو ایک متشدد حملے کی سازش میں شریک ہونے کے شُبے میں پیرس میں 14 ستمبر کو گرفتار کیا گیا تھا۔

فرانس میں گذشتہ چند ہفتوں کے دوران قریباً دس لڑکوں کو دہشت گردی یا تشدد کی سرگرمیوں میں ملوّث ہونے کے شُبے میں گرفتار کیا گیا تھا۔ان کے علاوہ بھی بہت سے لڑکے جنگ پسندی کی سرگرمیوں کی جانب مائل ہوئے ہیں۔یہ خیال کیا جاتا ہے کہ ان سب کو انتیس سالہ راشد قاسم ہی نے متاثر کیا تھا جو داعش کی متعدد پروپیگنڈا ویڈیوز میں نمو دار ہوچکا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں