اماراتی بحری جہاز پرحوثیوں کا حملہ، امریکا کی مذمت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی وزارت خارجہ نے ایک بیان میں یمن کی بندرگاہ باب المندب میں متحدہ عرب امارات کے ایک بحری جہاز پر ایران نواز حوثی باغیوں کے حملے کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے۔

العربیہ ٹی وی چینل کے مطابق امریکی محکمہ خارجہ کے ترجمان جان کیربی نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ان کا ملک باب المندب بندرگاہ پر اماراتی بحری جہاز پر حوثیوں کے حملے کو سنجیدگی سے دیکھتا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ امریکا باب المندب سے تمام جہازوں کی بہ حفاظت اور پرامن آمد ورفت کا پابند ہے اور کسی کو وہاں سے گذرنے والے جہازوں کو نشانہ بنانے کی اجازت نہیں دی جاسکتی ہے۔

جان کیری نے یمنی باغیوں سے پرزور مطالبہ کیا کہ وہ بحری جہازوں اور امدادی قافلوں پر حملوں کا سلسلہ فوری طور پر بند کریں۔

ادھر سعودی عرب کی قیادت میں قائم عرب اتحاد نے بھی خبردار کیا ہے کہ حوثی باغی اور علی صالح ملیشیا کے جنگجو باب المندب میں عالمی جہاز رانی کی راہ میں رکاوٹ بن سکتے ہیں۔ عرب اتحاد کی جانب سے یہ انتباہ اس وقت کیا گیا جب یمنی باغیوں نے جنگ سے زخمیوں کو لے جانے اور امدادی سامان لے کر آنے والے اماراتی جہاز پر حملہ کرکے اسے نقصان پہنچایا تھا۔

ہفتے کے روز حوثی باغیوں نے باب المندب میں ایک کارروائی کے دوران متحدہ عرب امارات کے ’سویفٹ‘ نامی بحری جہاز پر حملہ کردیا تھا۔ یہ جہاز یمن میں جنگ کے زخمیوں کو ملک سے باہر علاج کے لیے لے جانے اور متاثرین کے لیے امدادی سامان لے کر وہاں پہنچا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں