.

جاسٹا سے عالمی سطح پر افراتفری پیدا ہوگی: سوڈانی صدر کا انتباہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سوڈانی صدر عمر حسن البشیر نے خبردار کیا ہے کہ امریکی کانگریس میں حال ہی میں منظور کردہ انصاف دلا پانے برخلاف دہشت گردی قانون (جاسٹا) کے نفاذ سے اقوام کی خود مختاری خطرے میں پڑ جائے گی۔

سوڈانی صدر کی جانب سے خرطوم میں جاری کردہ ایک بیان میں امریکی قانون سازوں کو خبردار کیا گیا ہے کہ اس قانون پر عمل درآمد سے گریز کریں کیونکہ اس سے دہشت گردی کی کارروائیوں سے متاثرہ افراد کو ان حملوں سے مبینہ طور پر وابستہ کیے گئے ممالک کے خلاف قانونی چارہ جوئی کا حق حاصل ہوجائے گا۔

صدر عمرالبشیر نے کہا:''یہ قانون ریاستی خود مختاری اور استثنا کے اصول کے منافی ہے اور اس سے عالمی سطح پر افراتفری کی راہ ہموار ہوسکتی ہے''۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ سوڈان جاسٹا پر صدر براک اوباما کے ویٹو کو کانگریس کی جانب سے منسوخ کیے جانے کا اقدام تسلیم نہیں کرتا ہے اور امریکا ایسے خود مختار ملک کو خود مختار ریاستوں کے استثنا اور قوانین کا احترام کرنا چاہیے۔

درایں اثناء ترک صدر رجب طیب ایردوآن نے بھی جاسٹا کے بارے میں اپنے مؤقف کا اعادہ کرتے ہوئے اس امید کا اظہار کیا ہے کہ اس کو جلد سے جلد منسوخ کردیا جائے گا۔انھوں نے اسی ہفتے ایک بیان میں امریکی کانگریس میں منظور کردہ جاسٹا کی مذمت کی تھی۔

صدر ایردوآن نے ترک پارلیمان کے اجلاس میں تقریر کرتے ہوئے کہا کہ ''امریکی کانگریس کی جانب سے سعودی عرب کے خلاف نائن الیون حملوں کی پاداش میں قانونی چارہ جوئی کی اجازت دینا ایک بدقسمتی ہی کی بات ہے''۔

انھوں نے کہا کہ ''یہ اقدام جرائم کی انفرادی مجرمانہ ذمے داری کے اصول کے خلاف ہے۔ہم یہ توقع کرتے ہیں کہ اس غلط قانون کو جلد سے جلد واپس لے لیا جائے گا''۔