.

حوثی ملیشیا کا سینیّر کمانڈر نجران کے نزدیک فضائی حملے میں ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کی قیادت میں عرب اتحاد کے نجران کے نزدیک واقع یمنی علاقے میں ایک فضائی حملے میں حوثی ملیشیا کا ایک لیڈر عبداللہ قاید الفديع اپنے متعدد ساتھیوں سمیت ہلاک ہوگیا ہے۔

سکیورٹی ذرائع نے اس کی ہلاکت کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا ہے کہ منگل کی صبح سعودی اتحاد کے لڑاکا طیارے نے اس کے قافلے کو نشانہ بنایا تھا۔

عبداللہ کا شمار حوثی ملیشیا کے صف اول کے جنگجو کمانڈروں میں ہوتا تھا۔وہ نجران کے ساتھ سرحد پر سعودی سکیورٹی فورسز کے خلاف جنگ آزما حوثی ملیشیا کا ڈپٹی جنرل سپروائزر تھا۔

تعز میں راکٹ حملہ

ادھر یمن کے جنوب مغربی شہر تعز میں حوثی باغیوں نے ایک مصروف بازار پر دو راکٹ فائر کیے ہیں جس کے نتیجے میں چھے شہری ہلاک اور آٹھ زخمی ہوگئے ہیں۔

سکیورٹی ذرائع کے مطابق مرنے والوں میں تین بچے بھی شامل ہیں۔انھوں نے بتایا کہ تعز کے علاقے بیٔر باشا میں ایک ڈاک خانے کے باہر راکٹ گرنے سے دھماکے ہوئے تھے۔

تعز یمن کا تیسرا بڑا شہر ہے۔ایران کے حمایت یافتہ حوثی باغیوں نے اپنے اتحادی سابق صدر علی عبداللہ صالح کی وفادار فورسز کی مدد سے اس شہر کا گذشتہ کئی مہینوں سے مکمل محاصرہ کررکھا ہے جس کی وجہ سے محصور شہری گوناگوں مسائل سے دوچار ہیں۔