.

جرمن پولیس کو بم حملے کی منصوبہ بندی کرنے والے مشتبہ شامی کی تلاش

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

جرمنی میں پولیس مشرقی شہر چیمنتز میں ایک بائیس سالہ مشتبہ شامی نوجوان کی تلاش میں ہے۔اس پر شُبہ ہے کہ اس نے ایک بم حملے کی منصوبہ بندی کی ہے۔

پولیس نے ریاست سیکسونی میں جابرالبکر کی تلاش کے لیے وارنٹ جاری کیے تھے۔اس نے مبینہ طور پر سیاہ ڈھاٹا باندھ رکھا ہے۔اس پر بم حملے کی تیاری کا شُبہ ہے۔پولیس کا کہنا ہے کہ وہ جنوری 1994ء میں شام میں پیدا ہوا تھا۔

سیکسونی کے پولیس ترجمان ٹام برن ہارڈ نے صحافیوں کو بتایا ہے کہ جرمنی کی داخلی انٹیلی جنس ایجنسی نے جمعہ کی شب مبینہ حملے کے منصوبے کے بارے میں اطلاع دی تھی اور اس کے بعد پولیس نے مشرقی شہر چیمنتز میں واقع ایک اپارٹمنٹ میں چھاپا مار کارروائی کی ہے مگر اس کو وہاں سے مشتبہ نوجوان نہیں ملا ہے۔

اس علاقے کے مکینوں نے ایک دھماکے کی آواز سننے کی اطلاع دی ہے لیکن یہ پولیس کے اپارٹمنٹ کے دروازے کو توڑنے کے لیے دھاوے سے پیدا ہوئی تھی۔ پولیس ترجمان کے بہ قول اس مشتبہ نوجوان کی تلاش اور تحقیقات جاری ہے۔

جرمنی میں اس سال موسم گرما میں دو حملوں کے بعد سے سکیورٹی الرٹ ہے۔داعش نے ان دونوں حملوں کی ذمے داری قبول کی تھی۔ان میں متعدد افراد زخمی ہوگئے تھے جبکہ دونوں حملہ آور مارے گئے تھے۔میونخ میں ایک مال میں فائرنگ سمیت دو اور حملوں کے بعد ملک میں خوف وہراس پھیل گیا تھا۔تاہم ان دونوں حملوں کا اسلامی انتہا پسندی سے کوئی تعلق نہیں تھا۔