.

ہیٹی میں سمندری طوفان کی تباہی، ہلاکتیں 800 متجاوز

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ہیٹی میں آنے والے سمندری طوفان میتھیو کے نتیجے میں ہلاک ہونے والے افراد کی تعداد آٹھ سو تک پہنچ گئی ہے جبکہ اقوام متحدہ نے خبردار کیا ہے کہ اس طوفان سے ہونے والے نقصان کو جاننے میں کئی دن لگ سکتے ہیں۔

منگل کو آنے والے طوفان میتھیو کے بعد جیسے جیسے امدادی کارکنوں کو جنوبی علاقوں تک رسائی حاصل ہوتی جا رہی ہے ہلاکتوں کی تعداد میں اضافہ سامنے آ رہا ہے۔

مقامی حکام کا کہنا ہے کہ براعظم امریکا کے غریب ملک ہیٹی میں یہ اب تک کا سب سے خطرناک سمندری طوفان ہے۔ جمعہ کی شام تک اس کے نتیجے میں 842 ہلاکتوں کی تصدیق کی جا چکی تھی۔ طوفان کے باعث کئی علاقے ایسے ہیں جہاں تک اب بھی امدادی کارکن نہیں پہنچ پائے ہیں۔

ورلڈ فوڈ پروگرام کے کارلوس ویلوسو کا کہنا ہے کہ بعض متاثرہ علاقوں تک صرف سمندر یا فضائی راستوں کے ذریعے ہی پہنچا جا سکتا ہے۔

امریکا کے ساحلی علاقوں سے انخلاء

اطلاعات کے مطابق ہیٹی میں آنے والے میتھیو سمندری طوفان کا اگلا رخ امریکی ریاست فلوریڈا ہے اور امریکا کے ساحلی علاقوں سے لوگوں کو محفوظ مقامات پر منتقل کرنے کا عمل شروع کردیا گیا ہے۔

زیادہ تر ہلاکتیں ہیٹی کے جنوب مشرقی ساحل کے قریبی علاقوں میں ہوئی ہیں جہاں طوفان میتھیو اپنی مکمل شدت کے ساتھ ٹکرایا تھا۔

میتھیو طوفان جو 233 کلو میٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے ہیٹی سے ٹکرایا تھا اب تیسرے درجے کے طوفان میں بدل چکا ہے اب 120 میل فی گھنٹہ کی رفتار سے امریکی ریاست فلوریڈا کے ساحل کی جانب بڑھ رہا ہے۔ اطلاعات کے مطابق طوفان فلوریڈا کے ساحلوں سے چند گھنٹے دور رہ گیا ہے، تاہم یہ بتانا مشکل ہے کہ آیا طوفان فلوریڈا کے زمینی علاقوں تک پہنچے گا یا نہیں۔ ہیٹی میں اب تک 61 ہزار 500 افراد کو محفوظ مقامات پر منتقل کیا گیا ہے۔

امریکی صدر براک اوباما نے ایمرجنسی حکام کے ایک اجلاس سے خطاب میں کہا کہ میں چاہتا ہوں کہ میتھیو طوفان اپنی تمام تر شدت اور تباہ کاریوں کے باوجود شہریوں کی جان ومال کے نقصان کا موجب ہرگز نہیں بننا چاہیے۔ تمام ایمرجنسی اداروں کو الرٹ کردیا گیا ہے اور طوفان سے ممکنہ طور پرمتاثر ہونے والے علاقوں میں بھی حفاظتی انتظامات کئے ہیں۔

خدشہ ظاہر کیا ہے کہ میتھیو طوفان فلوریڈا، جورجیا، ساؤتھ کیرولینا اور نارتھ کیرولینا کو متاثر کر سکتا ہے۔ حکام کی طرف سے شہریوں کے لیے اگلے 24، 48 اور 72 گھنٹے کی ہدایت کو فالو کرنے کی ہدایت کی گئی ہے۔ فلوریڈا کے گورنر رک سکاٹ نے خبردار کیا ہے کہ عفریت کا رخ فلوریڈا کی جانب ہے اور یہ تباہ کن ہو سکتا ہے۔

گذشتہ ایک دہائی کے دوران آنے والے شدید طوفان کے باعث متاثر ہونے والے علاقوں میں امدادی کام جاری ہیں۔

طوفان نے 118 سالہ ریکارڈ توڑ دیا

امریکا میں محکمہ موسمیات کی طرف سے جاری کردہ رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ میتھیو سمندری طوفان اپنی شدت میں ماضی میں ہونے والے کئی طوفانوں سے زیادہ خوفناک ہے اور اس نے 118 سالہ طوفانی ریکارڈ توڑ دیا ہے۔ سو صدی قبل اسی طرح کا ایک سمندری طوفان امریکی ریاست فلوریڈا کے شمال مشرقی ساحل سے ٹکرایا تھا۔

بارشوں اور موسمیات کی صورت حال پرنظر رکھنے والے ادارے نے خبردار کیا ہے کہ میتھیو طوفان جنوبی فلوریڈا ٹکرانے کے بعد ریاست جارجیا سے ہوتے ہوئے ساؤتھ کیرولینا تک پہنچ سکتا ہے اور اس طرح یہ طوفان بحر اوقیانوس کے بیشتر ساحلی حصوں کو اپنی لپیٹ میں لے سکتا ہے۔

سنہ 2005ء میں 177 کلو میٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے آنے والا طوفان ویلما امریکی ساحلوں سے پوری شدت کے ساتھ ٹکرایا تھا۔ فلوریڈا کے گورنر اسکوٹ نے خبردار کیا ہے کہ میتھیو سمندری طوفان بھی کم شدت کا حامل نہیں۔ یہ طوفان بھی بڑے پیمانے پر تباہی کا موجب بن سکتا ہے۔ اس لیے ڈیڑھ ملین لوگوں کو گھروں سے نکل کر محفوظ ٹھکانوں تک پہنچنے کی تاکید کی گئی ہے۔

امریکا کی تین ریاستوں کےبعد نارتھ کیرولینا کے حکام نے بھی ہنگامی حالت کا اعلان کردیا ہے۔ امریکی صدر نے بھی طوفان سے متاثر ہونے والی چار ریاستوں کے گورنروں سے ٹیلیفون پر رابطہ کیا ہے اور انہیں ہرممکن معاونت فراہم کرنے کی یقین دہانی کرائی ہے۔