.

افغانستان : اہلِ تشیع کی مسجد کے باہر بم دھماکا ،14 افراد ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

افغانستان کے شمالی صوبے بلخ میں بدھ کے روز اہلِ تشیع کی ایک مسجد کے باہر بم دھماکے میں چودہ افراد ہلاک اور چوبیس زخمی ہوگئے ہیں۔

افغان حکام کے مطابق بلخ کے صوبائی دارالحکومت مزار شریف سے بیس کلومیٹر دور واقع ضلع بلخ میں یوم عاشورا کے سلسلے میں جمع شیعہ افراد کو بم حملے میں نشانہ بنایا گیا ہے۔صوبائی گورنر کے ترجمان منیر احمد فرہاد نے بتایا ہے کہ دھماکا مسجد کے داخلی دروازے پر ہوا ہے۔انھوں نے اس میں چودہ افراد کی ہلاکت کی تصدیق کی ہے۔

فوری طور پر کسی گروپ نے اس بم دھماکے کی ذمے داری قبول نہیں کی ہے۔افغانستان میں دو روز میں اہل تشیع پر یہ دوسرا حملہ ہے۔منگل کی شب ایک مسلح حملہ آور نے دارالحکومت کابل میں ایک مسجد میں عاشورا کی مجلس پر فائرنگ کردی تھی جس کے نتیجے میں اٹھارہ افراد ہلاک اور پچاس زخمی ہوگئے تھے۔

سخت گیر جنگجو گروپ دولت اسلامیہ ( داعش) نے اس حملے کی ذمے داری قبول کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔اسی گروپ نے جولائی میں کابل میں ہزارہ مظاہرین پر بم حملے کی بھی ذمے داری قبول کی تھی۔اس حملے میں چوراسی افراد ہلاک ہوگئے تھے۔