اسرائیلی وزیرِ توانائی کا تعلقات کی بحالی کے بعد پہلا دورۂ ترکی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

اسرائیل کے توانائی کے وزیر یو وال اسٹینٹز ترکی کے ساتھ معمول کے تعلقات کی بحالی کے بعد استنبول پہنچے ہیں جہاں انھوں نے ترک ہم منصب بیرت البیرق کے ساتھ دو طرفہ تعلقات اور خاص طور پر توانائی کے شعبے میں تعاون بڑھانے پر بات چیت کی ہے۔

اسرائیلی وزیر کی جمعرات کی صبح استنبول آمد ہوئی تھی اور وہ وہاں جاری عالمی توانائی کانفرنس میں شرکت کے لیے آئے ہیں۔وہ ترک وزیر سے ملاقات کے بعد توانائی کانفرنس میں ''مشرقی بحر متوسط میں نیا لینڈ اسکیپ'' کے موضوع پر اطلانتک کونسل کے پینل میں تقریر کرنے والے تھے۔

واضح رہے کہ گذشتہ چھے سال کے بعد کسی اسرائیلی وزیر کا ترکی کا یہ پہلا دورہ ہے۔سنہ 2010ء میں ترکی سے غزہ جانے والے ایک امدادی بحری قافلے پر اسرائیلی کمانڈوز نے حملہ کردیا تھا اور اس حملے میں دس ترک رضاکار جاں بحق ہوگئے تھے۔

اسرائیلی فورسز کی اس کارروائی کے بعد ترکی نے صہیونی ریاست کے ساتھ سیاسی ،سفارتی ،عسکری اور تجارتی تعلقات منقطع کر لیے تھے۔اس واقعے پر اسرائیل نے امریکا کی مداخلت کے بعد ترکی سے معاف مانگ لی تھی اور اسی سال دونوں ملکوں کے درمیان معمول کے تعلقات بحال ہوئے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں